تازہ ترین
چیئرمین نیب نے کرپشن کے 9 کیسز کی انکوائری کی منظوری دے دی

چیئرمین نیب نے کرپشن کے 9 کیسز کی انکوائری کی منظوری دے دی

اسلام آباد: (10 اکتوبر 2018) نیب نے کرپشن کے خلاف کارروائیاں تیز کردی ہیں۔ خواجہ سعدرفیق، ثناءاللہ زہری، منظور وٹو اور منظور وسان سمیت دیگر کے خلاف مختلف کرپشن شکایات پر نو انکوائریوں کی منظوری دی گئی ہے۔ نیب بورڈ نے بائیس کرپشن انکوائریاں تحقیقات میں بدلنے اور 5 کیسوں میں ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کرنے کی منظوری بھی دے دی ہے۔

قومی احتساب بیورو (نیب) بدعنوانی کی سرکوبی کیلئے سرگرم ہوگیا ہے۔ چیئرمین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال کی زیرصدارت نیب ایگزیکٹو بورڈ کے اجلاس میں مختلف کرپشن شکایات پر نو انکوائریوں کی منظوری دے دی گئی ہے۔

نیب اعلامیہ کے مطابق سابق وفاقی وزیرخواجہ سعدرفیق، ریلوے افسران، سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ زہری، سابق وفاقی وزیر منظور وٹو، سابق وزیر سندھ منظور وسان، نواب علی وسان اور محمد افتخار گیلانی کے خلاف کرپشن کی شکایات پر انکوائریاں ہوں گی۔نیب بورڈ نے 22 کرپشن انکوائریز کو تحقیقات میں بدلنے کی منظوری دیدی ہے جس میں پیراگون سٹی ہاؤسنگ اسکینڈل میں خواجہ سعد رفیق، خواجہ سلمان رفیق، ندیم ضیاء اور قیصر بٹ، اور سی ڈی اے کے سابق چیئرمین کامران لاشاری اور سی ڈی اے بورڈ کے خلاف کرپشن تحقیقات ہوگی۔

اس کے علاوہ سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار، سابق وزیر انوشہ رحمان اور سابق چیئرمین پی ٹی اے اسماعیل شاہ کے خلاف بھی کرپشن کی تحقیقات ہوں گی۔نیب بورڈ نے پانچ کیسز میں کرپشن ریفرنسز احتساب عدالتوں میں دائر کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ نیب اعلامیہ کے مطابق سابق ایم ڈی پی ایس او نعیم میر اور پی ایف او کے سابق عہدیداروں کے خلاف ریفرنس دائر کیا جائے گا۔ پی ایس او انتظامیہ پر قومی خزانے کو 23 ارب روپے نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔

یہ بھی پڑھیے

چیئرمین نیب کابدعنوان عناصر کو کٹہرےمیں لانےکاعزم

بدعنوانی کا خاتمہ اور عوام کی لوٹی ہوئی رقم واپس دلانا اولین ترجیح ہے، چیئرمین نیب

 

Comments are closed.

Scroll To Top