تازہ ترین
خون کے آخری قطرے تک قوم کے حقوق کیلئے لڑوں گا، عمران خان

خون کے آخری قطرے تک قوم کے حقوق کیلئے لڑوں گا، عمران خان

لاہور: (29 اپریل 2018) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ خون کے آخری قطرے تک اپنی قوم کے حقوق کیلئے لڑوں گا۔

لاہور میں مینارِ پاکستان گراؤنڈ میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین تحریکِ انصاف عمران خان نے کہا کہ جس طرح کا پاکستان بنا دیا گیا ہے اس کا خواب علامہ اقبالؒ نے دیکھا اور نہ ہی قائدِ اعظم محمد علی جناحؒ نے اس کی تعبیر سوچی تھی۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

عمران خان نے کہا کہ کبھی میری قوم نے مایوس نہیں کیا، دل سے آپ کیلئے دعائیں نکلتی ہیں۔ سارے مجمع کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ جتنی بھی میری زندگی ہے، آپ کیلئے خون کے آخری قطرے تک لڑوں گا۔انہوں نے کہا کہ اس گراؤنڈ میں کھڑے ہو کر قائدِاعظم نے 1940ء میں ایک اعلان کیا تھا۔ قائدِ اعظمؒ نے مطالبہ کیا تھا کہ ہندوستان کے مسلمانوں کو پاکستان چاہیے۔ آج سب خود سے سوال کریں کہ پاکستان کیوں بنا تھا؟

عمران خان نے کہا کہ جس طرح کا یہ پاکستان بن چکا ہے، یہ علامہ اقبالؒ کا خواب اور قائدِ اعظم کی تعبیر نہیں تھی۔ ہم آج تباہی کی طرف جا رہے ہیں۔ قائدِاعظم جو پاکستان چاہتے تھے اس میں سب کے حقوق تھے، اُس پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق برابر تھے۔چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ہمارے نبی حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم دنیا کے عظیم لیڈر تھے جنہوں نے مدینہ میں دنیا کی پہلی فلاحی ریاست بنائی تھی جہاں رحم تھا اور جس کی بنیاد ہی انصاف پر رکھی گئی تھی۔

انہوں نے کہا کہ حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے کہا کہ قانون سب کیلئے سب برابر ہوں گے۔ مدینہ کی ریاست کی وجہ سے مسلمان دنیا کی عظیم قوم بنے اور 700 سال تک دنیا کی سپر پاور رہے۔ ہمارے ملک نے بھی مدینہ کی ریاست کی طرح ماڈل اور دنیا میں مثالی ملک بننا تھا۔عمران خان نے کہا کہ کدھر قائدِاعظم اور کہاں موجودہ لیڈرز۔ قائدِاعظم کے مخالف بھی انہیں صادق اور امین کہتے تھے کیونکہ وہ ہندوستان میں ایک آزاد لیڈر تھے لیکن آج حالات یہ ہیں کہ پاکستان کے وزیرِاعظم کی امریکی ایئرپورٹ پر تلاشی لی جاتی ہے۔

چیئرمین تحریک انصاف نے مزید کہا کہ وزیرِاعظم شاہد خاقان عباسی کی امریکا میں تلاشی شرمناک ہے۔ اگر ہمارے ملک کے وزیرِاعظم کا یہ حال ہوتا ہے تو عام پاکستانیوں کے ساتھ کیا سلوک ہوتا ہوگا۔

اس سے قبل جلسے سے خطاب کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ لاہوریوں آپ پورے پاکستان کاجذبہ ہیں، لاہور کی گلیوں میں ختم نبوت کیلئے خون بہا۔ شیخ رشید کھڑا ہوگیا اور ختم نبوت قانون میں ترمیم نہیں ہوئی۔ پی ٹی آئی کے ساتھ اس لیے ہوں کہ غریب کی تبدیلی چاہتاہوں۔انہوں نے کہا کہ آج چیف جسٹس کو عوام کے سمندر میں سلام پیش کرتا ہوں۔ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار جہاد کررہے ہیں۔

شیخ رشید نے کہا کہ ملک میں پانی، بجلی، روزگار نہیں ہے۔ مفتاح کا پتہ نہیں کہاں سے مفتا لگ گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ شہبازشریف مریم نواز کے سامنے نہیں بول سکتے۔ یہ صرف نام کےشریف ہیں۔ میں نوازشریف کےخاندان کی سیاست نہیں دیکھ رہا۔ ملک کے حالات الیکشن سے پہلے بھی خراب ہوسکتے ہیں اور بعد میں بھی۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان کو سب سے بہتر انسان سمجھتا ہوں۔ غلطیاں سب سے ہوتی ہیں لیکن عمران خان کا دامن صاف ہے۔

جلسے کیلئے 120 فٹ لمبا، 32 فٹ چوڑا اور 24 فٹ اونچا اسٹیج تیار کیا گیا ہے۔ اسٹیج کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔ اسٹیج کا پہلا حصہ پی ٹی آئی قائدین کے بیٹھنے کیلئے ہے اور وہاں پر صوفے لگائے گئے ہیں۔ پی ٹی آئی کی لیڈر شپ کی تقاریر کیلئے نیچے ڈائس لگایا گیا ہے جبکہ عمران خان کی تقریر کیلئے مرکزی اسٹیج کے اوپر دوسرا اسٹیج بنایا گیا ہے۔

اسٹیج کے عقب میں تاریخ کی سب سے بڑی اسکرین آویزاں کی گئی ہے۔ جلسہ گاہ میں 50  ہزار کرسیاں لگائی گئیں ہیں۔

جلسہ گاہ میں خواتین اور فیملیز کیلئے الگ انکلوژرز بنائے گئے ہیں۔ جلسہ گاہ میں 5 داخلی راستے رکھے گئے ہیں۔ وی آئی پی، مردوں اور خواتین کو علیحدہ علیحدہ راستوں سے گزارا جا رہا ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top