تازہ ترین
پاک فوج کی دہشتگردی کیخلاف جنگ کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، امریکی سینیٹرز

پاک فوج کی دہشتگردی کیخلاف جنگ کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، امریکی سینیٹرز

واشنگٹن (14 ستمبر 2017) مختلف امریکی سینیٹرز نے پاکستانی فوج کی دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہوئے اس بات کا برملا اظہار کیا ہے کہ پاکستان نے اس جنگ میں غیر معمولی خدمات انجام دی ہیں۔ امریکی سینٹرز کا یہ اظہار خیال ٹرمپ کے پاکستان مخالف بیانات کی نفی کرتا ہے۔

امریکی سینٹرز پاکستانی فوج کی دہشت گردی کے خلاف جنگ کی تائید کیے بغیر نہ رہ سکے۔ سینیٹر جان میک کین کا ماننا ہے کہ اہم دورہ پاکستان کے دوران انہوں نے بخوبی اس بات کا مشاہدہ کیا کہ پاک فوج دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے ٹھوس اور مثبت اقدامات کرنے میں کوشاں ہے۔

پاکستان کو مختلف چیلنجز کا سامنا بھی ہے لیکن اس کے باوجود ہمیں امید ہے کہ پاکستان موثر حکمت عملی پر عمل پیرا ہے۔ سینیٹر جان میک کین کے مطابق اس دورے میں پاک افغان تعاون اور تعلقات پر بھی گفتگو ہوئی جس کے نتائج کامیابی کی طرف بڑھتے قدموں کی طرح ہیں۔

سینٹر لنڈسی اولن کا کہنا ہے کہ پاک فوج کی اصل کامیابی یہ ہے کہ حالیہ برسوں میں اس نے فاٹا کی شورش زدہ صورتحال پر قابو پایا۔ پاکستانی عوام نے دہشت گردوں کو مسترد کردیا ہے اور اس سلسلے میں پاک فوج کا کردار مثالی رہا جس نے 2 برسوں کے دوران دہشت گردوں کا خاتمہ کرنے میں بہترین عملی اقدامات کیے۔

سینیٹر الزبتھ ورن کے مطابق دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان فرنٹ لائن کا رول نبھا رہا ہے جسے کسی صورت نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔ اور امریکا کو پاکستان کے ساتھ شراکت داری کرنی پڑے گی جبھی ہم دہشت گردی کے خلاف یہ جنگ جیت سکیں گے۔

سینیٹر شیلڈن نے پاک فوج کو مبارک داد دیتے ہوئے جنوبی وزیرستان کا ذکر کیا ان کے مطابق جنوبی وزیرستان میں امن کی بحالی میں پاک فوج کے کردار کو کسی صورت فراموش نہیں کیا جاسکتا۔

یہ بھی پڑھیئے

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے امریکی سینیٹرز کے وفد کی ملاقات

مشیر خارجہ سرتاج عزیز سے امریکی سینیٹرز کے 5 رکنی وفد کی ملاقات

Comments are closed.

Scroll To Top