تازہ ترین
پاکستان کا 71 واں یوم آزادی جوش و جذبے سے منایا گیا

پاکستان کا 71 واں یوم آزادی جوش و جذبے سے منایا گیا

اسلام آباد: (14 اگست 2018) پاکستان کے دارالخلافہ اسلام آباد میں اکتیس جبکہ صوبائی دارلحکومتوں کراچی، لاہور، کوئٹہ اور پشاور میں یوم آزادی کے دن کا آغاز اکیس توپوں کی سلامی سے ہوا۔ ملک کے مختلف شہروں میں تقریبات کا بھی انعقاد ہوا جبکہ یوم آزادی کے حوالے سے پیغامات کا بھی سلسلہ جاری رہا۔

پاکستان کی اکہترویں یوم آزادی کے موقع پر آج دن کا آغاز سب سے پہلے پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں اکیس توپوں کی سلامی سے ہوا۔ محفوظ گیریزن میں اکیس توپوں کی سلامی کے موقع پر فضا جوانوں کے پاکستان زندہ باد کے نعروں سے گونچ اٹھی۔اس کے بعد پاکستان کے دارالخلافہ اسلام آباد میں اکتیس توپوں کی سلامی دی گئی اور یوم آزادی کے دن کا آغاز کیا گیا۔خیبر پختوںخوا کے صوبائی دارالحکومت پشاور میں بھی اکہترویں یوم آزادی کے موقع پر دن کا آغازاکیس توپوں کی سلامی سے کیا گیا۔ ملیر کینٹ کراچی اور کوئٹہ کینٹ میں بھی21،21توپوں کی سلامی دی گئی۔ فوجی جوانوں نے نعرہ تکبیر اللہ اکبر اور پاکستان زندہ باد کے نعروں سے لہو گرما دیا۔

یوم آزادی کے موقع پر کراچی میں مزار قائد اور لاہور میں مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریبات منعقد ہوئی۔ مزار قائد پر نیوی جبکہ مزار اقبال پر پنجاب رینجرز کے چاق وچوبند دستوں نے اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھال لیئے۔ کراچی میں مزار قائد پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب ہوئی۔نیوی کے کیڈٹس نے مزار قائد پر اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھال لئے۔ اعزازی گارڈز میں نیول اکیڈمی کے دو دستے شامل ہیں۔ تقریب کے مہمان خصوصی کمانڈنٹ پاکستان نیول اکیڈمی کموڈور وقار محمد تھے۔ نیول کموڈور وقار محمد نے مزار قائد پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی کی۔یوم آزادی کے موقع پر لاہور میں بھی مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پروقار تقریب ہوئی۔پنجاب رینجرز کے چاق و چوبند دستے نے مزار اقبال پر اعزازی گارڈز کے فرائض سنبھالے۔ جی او سی میجر جنرل شاہد محمود نے فوج اور رینجرز کے دستوں کا معائنہ کیا۔ انہوں نے مزار اقبال پر پھولوں کی چادر چڑھائی اور فاتحہ خوانی بھی کی۔ اس موقع پر وطن عزیز کی سلامتی کیلئے خصوصی دعائیں بھی کی گئیں۔

دوسری جانب جناح کنونشن سینٹر اسلام آباد میں پرچم کشائی کی مرکزی تقریب کا آغاز تلاوت قرآن مجید سے ہوا۔ جس کے بعد مہمان خصوصی صدر مملکت ممنون حسین نے خطاب کیا۔ تقریب میں وزیراعظم جسٹس (ر) ناصر الملک، تینوں مسلح افواج کے سربراہان، چئیرمین سینٹ صادق سنجرانی، سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کے علاوہ وفاقی کابینہ کے ارکان ، سیاسی جماعتوں کی قیادت اوردوست ممالک کے سفرا شریک ہوئے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

مرکزی تقریب سے خطاب کے دوران صدر مملکت ممنون حسین نے کہا کہ پاکستان ان تصورات کی تصویر ہے جس کی آغوش میں ہم ہر لمحہ آزادی کا لطف اٹھاتے ہیں، یوم آزادی پر سبز ہلالی پرچم مزید بلند کرنے کی لگن بڑھ جاتی ہے۔ آج حقیقی جشن کا دن ہے اور میں پوری قوم کو دل کی گہرائیوں سے مبارک باد پیش کرتا ہوں۔

صدر مملکت نے کہا کہ جشن آزادی اور عام انتخابات کے درمیان پیغام پوشیدہ ہے، یہ دن یاد دہانی ہے کہ وہی قانون کامیاب رہا جس میں عوام کی مرضی شامل رہی، پاکستان کی قسمت کے فیصلے ووٹ کی پرچی سے ہوں گے، پاکستان کے نمائندے وہی ہوسکتے ہیں جنہیں ووٹرز سند نمائندگی دیں، دعا ہے کہ پاکستان کی خدمت کرنے والوں کو آسانیاں عطا ہوں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

صدر مملکت نے کہا کہ نئی نسل وطن سےمحبت، تعمیر و ترقی کی مخلصانہ خواہش سےمالا مال ہے، ہم ابھی مکمل طور پر منزل تک نہیں پہنچ سکے، ان رکاوٹوں پرغور کرنےکی ضرورت ہے جن کی وجہ سےمسائل درپیش رہے، پاکستان کو سیاسی اور سماجی مشکلات سے نکالنے کیلیے ایک ہونے کی ضرورت ہے۔ملک کے اجتماعی فیصلوں کےلیے اداروں کو بااختیار بنانا ناگزیر ہے۔کشمیریوں سے یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ جشن آزادی پر فرزندان کشمیر کی قربانیوں کو یاد رکھتے ہیں، پاکستان کشمیریوں کےلیے سیاسی اخلاقی حمایت جاری رکھے گا، اقوام عالم کشمیریوں کوحقوق دلوانے کےلیے صدائے حق بلند کریں۔

دوسری جانب پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل ظفر محمود عباسی نےقوم کوپاکستان کے اکہترویں یوم آزادی کی مبارکباد دی ہے۔ ترجمان پاک بحریہ کے مطابق نیول چیف ایڈمرل ظفر محمود عباسی نے اپنے پیغام میں کہا کہ آزاد وطن جہد مسلسل،اسلاف کے کارناموں اور شہداء کر قربانیاں کا ثمر ہے۔سربراہ پاک بحریہ نے کہا کہ عزمِ صمیم اور محنت شاقہ کو زندگی کا اصول بنا کر ہی ہم ہر محاز پر کامیابی حاصل کر سکتے ہیں۔ پاک بحریہ کے تمام آفیسرز اور جوان اہل وطن کے ساتھ آزادی کے خوشیوں میں شریک ہیں۔واہگہ بارڈر پر پرچم اتارنے کی روایتی تقریب منعقد ہوئی جس میں ملک بھر سے شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ پرچم اتارنے کی تقریب میں عوام نے ملی جوش و جذبے کا مظاہرہ کیا، واہگہ بارڈر پاکستان زندہ باد، اللہ اکبر اور جیوے جیوے پاکستان کے فلک شگاف نعروں سے گونج اٹھا جبکہ پاکستانی بینڈز نے خوبصورت دھنیں بھکیر دیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

اس موقع پر یوم آزادی پر مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے پیغامات کا سلسلہ جاری رہا۔ نگراں وزیراعظم جسٹس (ر) ناصرالملک نے یوم آزادی کے موقع پراپنے پیغام میں کہا کہ چودہ اگست ہمیں اپنے آباؤ اجداد کی برصغیر کے مسلمانوں کے لیے ایک محفوظ اور الگ وطن کے حصول کی جمہوری جدوجہد کی یاد دلاتا ہے جہاں وہ مذہبی، ثقافتی اور سماجی اقدار کے مطابق اپنی زندگیاں بسرکرسکیں۔نگراں وزیراعظم نے کہا کہ قائداعظم کے اتحاد، ایمان اور نظم وضبط کے سنہری اصولوں پرعملدرآمد کے غیرمتزلزل عزم سے ہمیں اپنے موجودہ مسائل پرقابو پانے اور پاکستان کو خود کفیل اور اقتصادی لحاظ سے مستحکم اور خوشحال ملک بنانے میں مدد ملے گی۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر عمران خان نے ایک تصویر شیئر کی اور اپنے پیغام میں کہا کہ اقربا پروری اور بدعنوانی کے باعث ملکی معیشت کو سنگین بحران کا سامنا ضرور ہے تاہم مجھے یقین ہے کہ اگر ہم نے اتحاد کا دامن تھامے رکھا تو منزل پالیں گے اور پاکستان قائد و اقبال کے خوابوں کی تعبیر بنے گا۔ایک اور ٹوئٹ میں عمران خان نے انیس سو بتیس میں لندن میں منعقد ہونے والی گول میزکانفرنس کی تاریخی تصویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ گول میزکانفرنس کی تاریخی تصویر میں قائد اعظم اورعلامہ اقبال کے ساتھ میرے خالو ڈاکٹر جہانگیر خان اور میری والدہ کے چچا زمان خان(جن کے نام سے زمان پارک منسوب ہے) بھی دیکھے جاسکتے ہیں۔

دوسری جانب لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ اکہتر سال بعد آج بھی ہم منزل کی تلاش میں ہیں، آج بھی جمہوریت کی کشتی بھنور سے نہیں نکل سکی، دعا ہے کہ پاکستان صحیح معنوں میں اسلامی فلاحی ریاست بنے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

سابق وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ ہمیں اگلے چند سال میں پاکستان کوعظیم مملکت بنانا ہوگا، ہم جمہوریت کےذریعے پاکستان کو ترقی و خوشحالی سے ہم کنار کرسکتے ہیں، جمہوریت ہی وہ واحد راستہ ہے جس کے ذریعے ہم آگے بڑھ سکتے ہیں، اسی لئے ہم قومی اسمبلی میں آئے تاکہ ملک میں جمہوریت کی شمع روشن رکھ سکیں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ عام الیکشن کے نتائج کو خوشیوں میں شامل نہیں کرپائے، کراچی سے خیبر تک انتخابات میں دھاندلی کے خلاف احتجاج ہو رہے ہیں، کاش یوم آزادی کے ساتھ ہم شفاف انتخابات کے انعقاد کی خوشیاں بھی منا سکتے، دھاندلی زدہ الیکشن سے قومی شیرازہ بکھر سکتا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بھارتی ہائی کمیشن اسلام آباد کے’انڈیا ان پاکستان‘کے نام سے موجود آفیشل اکاؤنٹ پر جاری کیے گئے پیغام میں یوم آزادی کی مبارکباد پیش کی گئی ہے۔

ٹوئٹ پیغام میں کہا گیا ہے کہ یہ دن ہمیں جمہوری، پرامن اور خوشگوار خطے کیلئے کی گئی ہماری مشترکہ جدوجہد کی یاد دلاتا ہے۔ پیغام میں پاکستان اور بھارت دونوں کیلئے نیک خواہشات کا اظہار بھی کیا گیا ہے۔نوبل انعام یافتہ ملالہ یوسف زئی نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا جشن آزادی مبارک پاکستان، دعا کرتی ہوں ہمارا ملک پرامن، خوشحال اور آباد رہے۔

امریکا میں پاکستانی سفیر علی جہانگیر صدیقی نے یوم آزادی پر مبارکباد دی اور کہا کہ یوم آزادی کاآغازہم آباو اجداد کی قربانیوں کی یادسےکرتے ہیں، آج اس یاددہانی کادن ہے کہ ہم کتنا آگے بڑھ چکے، مستقبل میں ہمیں کہاں آگے جاناہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں نوجوانوں کی بڑی تعداد نے ووٹنگ میں حصہ لیا، نوجوان ہمارا احتساب کرتے ہیں، پاکستان میں نئی حکومت بھاری مینڈیٹ لے کر آئی ہے، امید ہے امریکا میں پاکستانی اپنے وطن کے مستقبل کیلئے جڑے رہیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اپنے وطن کی میراث سے جڑے رہنے کا یہی واحد راستہ ہے، امریکا میں پاکستانی سفارتخانہ اور قونصلیٹ پاکستانیوں کی خدمت کیلیےمستعد ہیں۔پاکستان کی یوم آزادی کے موقع ہر گوگل بھی کسی سے پیچھے نہیں رہا۔ دنیا کے سب سے بڑے سرچ انجن گوگل نے بھی اپنا ڈوڈل تبدیل کر کے پاکستانی پرچم کے رنگوں میں رنگ دیا ہے۔گوگل کے ڈوڈل پر سبز ہلالی پرچم پوری آب و تاب کے ساتھ لہراتا ہوا نظر آرہا ہے، اس سے قبل بھی گوگل مختلف مواقع پر پاکستان کے حوالے سے خصوصی ڈوڈل جاری کرچکا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

نامزد گورنر سندھ کو مزار قائد میں داخلے کی اجازت نہ مل سکی

جناح کنونشن سینٹر میں پرچم کشائی کی تقریب

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top