تازہ ترین
پاکستان کا نئی دلی میں موجود سفارتی عملہ کے اہل خانہ کو واپس بلانے پر غور

پاکستان کا نئی دلی میں موجود سفارتی عملہ کے اہل خانہ کو واپس بلانے پر غور

اسلام آباد: (13 مارچ 2018) نئی دہلی میں موجود پاکستانی سفارتکاروں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔ذرائع کےمطابق تناو کی اس فضا میں پاکستان نے نئی دلی میں موجود اپنے سفارتی عملے کے اہل خانہ کو وطن واپس بلانے پر بھی غور شروع کر دیا۔

ذرائع کے مطابق نئی دہلی میں موجود پاکستانی سفارتکاروں کو ہراساں کرنے کا سلسلہ جاری ہے اور بھارت کی وزارت خارجہ اپنے ایجنسیوں کے حکام کو لگام دینے میں ناکام ہو چکی ہے۔ تمام سفارتی آداب کو بالا ئے طاق رکھتے ہوئے نئی دلی میں آج پھر ایک  پاکستانی سفارتکار کے بچوں کو لیجانے والی گاڑی کو روک کر ہراساں  کیا گیا اور بڑی شاہرہ کے بیچوں بیچ ان کی  گاڑی کو روکوا کر انہیں ان کی منزل پر پہنچنے سے روک دیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اس وقت گاڑی میں پاکسانی سفارت کار کے دو بچے موجود تھے جن میں ایک بچے کی عمر 15 اور بچی کی عمر 11 برس تھی، دونوں بچے ڈرائیور کے ہمراہ اکیلے سفر کر رہے تھے اور اس واقعہ کے بعد شدید خوفزدہ، ذہنی دباؤ اور اضطراب کا شکار ہیں۔

موصول شدہ تفصیل کے مطابق ان کے گاڑی کے آگے دوسری گاڑی کھڑی کر کہ ان کی آمد و رفت میں دشواری پیدا کی گئی اور انھیں روکا گیا ۔ آج ہی کے روز ہونے والے ایک اور واقعہ میں  نئی دلی میں تعینات ایک سینئر پاکستانی سفارتکار کی گاڑی کو ایک اور آلٹو کار نے روکا، اور سفارتکار کی گاڑی کو آگے نہیں جانے دیا، اس موقع پر گاڑی میں سے شخص نے اتر کر سفارتکار کی تصاویر بھی لیں جس کے بعد پاکستانی ہائی کمشن نے معاملہ ایک بار پھر بھارتی وزارت خارجہ سے اٹھایا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

 

افغان صدر نے پاکستانی سفارتکار کے قتل کی تحقیقات کا حکم دیدیا

افغانستان میں پاکستانی سفارتکار کو قتل کردیاگیا

Comments are closed.

Scroll To Top