تازہ ترین
پاکستانی نئی ٹیسٹ ٹیم اسکواڈ ،ایک جائزہ

پاکستانی نئی ٹیسٹ ٹیم اسکواڈ ،ایک جائزہ

پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے 28 ستمبر سے شروع ہونے والی سری لنکا کے خلاف دو ٹیسٹ میچز پر مشتمل ہوم سیریز کے لئے قومی اسکواڈ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔پاکستان کرکٹ کے دو عظیم بلے بازوں یونس خان اور مصباح الحق کی ریٹائرمنٹ کے بعد یہ پاکستان کرکٹ ٹیم کی پہلی ٹیسٹ سیریز ہوگی۔

ایک روزہ اور ٹی ٹونٹی میں کپتانی کے بعد سرفراز احمد پہلی دفعہ پاکستان کی ٹیسٹ ٹیم کی کپتانی کا تاج اپنے سر سجائیں گے۔Image result for Mir Hamzaچیف سلیکٹر انضمام الحق کی جانب سے اعلان کردہ ٹیم میں کچھ نئے کھلاڑیوں کو بھی ٹیم میں شامل کیا گیا ہے جن میں مڈل آرڈر بلے باز عثمان صلاح الدین اور فاسٹ باولرمیر حمزہ،بلال آصف اور حارث سہیل شامل ہیں۔Image result for Sami Aslamعثمان صلاح الدین دو ہزار گیارہ ورلڈ کپ کے بعد ہونے والے دورہ ویسٹ انڈیز میں پاکستان کی ایک روزہ ٹیم کی نمائندگی کر چکے ہیں جبکہ میر حمزہ پہلی دفعہ قومی سطح پر ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔میر حمزہ کی کارکردگی کا اگر جائزہ لیں تو میر حمزہ 46 فرسٹ کلاس میچز میں 216 وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔حارث سہیل بھی اس سے پہلے ایک روزہ اور ٹی ٹونٹی میں پاکستان کی نمائندگی کر چکے ہیں لیکن ٹیسٹ اسکواڈ میں پہلی دفعہ اپنے جوہر دکھائیں گے۔۔چیف سلیکٹر انضمام الحق کے مطابق ٹیسٹ اسکواڈ میں یونس خان اور مصباح الحق کی جگہ حارث سہیل اور عثمان صلاح الدین کو اسکواڈ میں شامل کیا گیا ہے اور وہ پر امید ہیں کہ دونوں نوجوان کھلاڑی یونس اور مصباح کی طرح ٹیم کے لئے اچھی کاکردگی کا مظاہرہ بھی کریں گے۔Image result for Shan Masood۔پاکستان میں ہونے والے حالیہ آزادی کپ کے بعد محمد حفیظ ٹی ٹونٹی کے بعد ایک دفعہ پھر ٹیسٹ ٹیم میں بھی جگہ نہیں بنا پائے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ محمد حفیظ اب سلیکشن کمیٹی کے فیوچر پلان کا حصہ نہیں رہے اور سلیکشن کمیٹی خاص طور پر ہوم سیریز میں نوجوان کھلاڑیوں پر اعتماد کررہی ہے۔جبکہ محمد حفیظ کی جگہ 10 ٹیسٹ میچز میں 10۔23 کی اوسط سے 462 رنز بنانے والے پی سی بی گورننگ بورڈ کے رکن منصور مسعود خان کے صاحبزادے شان مسعود کو ایک دفعہ پھر ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے،شاید اس دفعہ وہ پرفارم کر جائیں۔Image result for Bilal Asif,اس ٹیم کے انتخاب کی سب سے خاص بات لیگ سپنر یاسر شاہ اور اظہر علی کی سلیکشن تھی۔دونوں کھلاڑی فٹنس مسائل کا شکار تھے اور ہیڈ کوچ مکی آرتھر جنہوں نے فٹنس مسائل کے باعث عمر اکمل کو چیمپیئنز ٹرافی جیسے بڑے ٹورنامنٹ کی ٹیم میں شامل ہونے کے باوجود انگلینڈ سے پاکستان واپس بھجوا دیا تھا لیکن اس بار وہ اظہر علی اور یاسر شاہ کو سری لنکا کے خلاف ہوم سیریز کے لئے ساتھ لے جانے کے لئے ہر حربہ استعمال کررہے تھے،پی سی بی میڈیکل پینل کے مطابق اظہر علی انجیکشنز لگا کے میچز کھیلیں گے جبکہ یاسر شاہ نے بھی ٹیم کے اعلان سے دو گھنٹے قبل اپنا فٹنس ٹیسٹ پاس کر لیا،آخر اتنی کیا مجبوری تھی کہ اظہر علی انجیکشن لگا کے میچز کھیلیں۔اور ایسے کھیلنے کے چکر میں اگر اپنی انجری کو مزید خراب کر بیٹھے تو اسکے ذمہ دار وہ خود ہونگے یا کوچ مکی آرتھر۔۔Image result for Mohammad Asgharاس میں کوئی شک نہیں کہ اظہر علی اور یاسر شاہ پاکستان ٹیسٹ اسکواڈ کا اہم ترین حصہ ہوتے ہیں اور ماضی میں بہترین پرفارمنسز کا مظاہرہ بھی کر چکے ہیں لیکن اگر ٹیم مینجمینٹ کی جانب سے فٹنس پر کوئی سمجھوتہ نہ کرنے کا کرائیٹیریا بنایا گیا ہے تو پھر وہ سب کے لئے ایک جیسا ہونا چاہیئے۔اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ مکی آرتھر کو عمر اکمل کے ساتھ کوئی ذاتی معاملات تھے۔Image result for Usman Salahuddinسری لنکا کے خلاف سیریز کے لئے انضمام اینڈ کمپنی نے پانچ فاسٹ باولرز جن میں محمد عامر،وہاب ریاض،حسن علی،محمد عباس اور میر حمزہ کو شامل کیا ہے جبکہ تین ریگولراسپنروں جن میں یاسر شاہ،بلال آصف اور محمد اصغر کو ٹیم کا حصہ بنایا گیا ہے۔میرے خیال کے مطابق سلیکشن کمیٹی کو اب وہاب ریاض کی جگہ فہیم اشرف جیسے نوجوان آل راونڈروں کو موقع دینا چاہیئے تھا کیوںکہ ایسی سپیڈ کا کیا فائدہ جو ٹیم کے کام نہ آسکے،جبکہ فہیم اشرف جیسے آل راونڈر پاکستان کے لئے کسی بھی فارمیٹ میں اچھا پرفارم کر سکتے ہیں۔اب دیکھنا ہے کہ مصباح الحق اور یونس خان کے بعد سرفراز احمد ٹیسٹ ٹیم کو کس طرح لے کے چلتے ہیں۔

ٓٓآزادی کپ: پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی

ورلڈ الیون ٹیم،کون ساغیرملکی کھلاڑی کب پاکستان آیا

 

Comments are closed.

Scroll To Top