تازہ ترین
پانامہ کے بعد پیراڈائز لیکس نے دنیا بھر میں تہلکہ مچادیا

پانامہ کے بعد پیراڈائز لیکس نے دنیا بھر میں تہلکہ مچادیا

ویب ڈیسک (6 نومبر 2017) پاناما کے بعد پیراڈائز لیکس نے دنیا بھر میں تہلکہ خیز انکشافات کردئے۔ دنیا کے بڑے نام ٹیکس چوری کی فہرست میں شامل ہیں۔

134ملین دستاویزات پر مشتمل پیراڈائز پیپرز نے دنیا بھر میں تہلکہ مچادیا۔ تازہ انکشافات میں سابق پاکستانی وزیراعظم شوکت عزیز،، ملکہ برطانیہ، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے 13 قریبی ساتھی، امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹلرسن، امریکی وزیر تجارت ولبرراس، کینیڈین وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کے قریبی ساتھی و مشیران، اردن کی سابق ملکہ، نیٹو کے سابق کمانڈر ویزلے کلارک ٹیکس چوری میں شامل ہیں۔

پیراڈائز لیکس میں سابق وزیراعظم شوکت عزیز کا ایک ٹرسٹ سامنے آیا۔ شوکت عزیز نے انٹارکٹک ٹرسٹ قائم کیا جس کے بینیفشری ان کی اہلیہ اور بچے بنے۔ دستاویزات کے مطابق شوکت عزیز نے ٹرست وزیر خزانہ بننے سے کچھ عرصہ قبل امریکہ میں قائم کیا تھا۔ ملکہ الیزبتھ نے ایک کروڑ پاؤنڈ کی ذاتی رقم آف شور کمپنیوں میں لگائی۔

یہ رقم ڈچز آف لنکاسٹر نے کیمن جزائز اور برمودا میں موجود فنڈز میں لگا رکھی تھی جس سے ملکہ برطانیہ کو آمدن ہوتی تھی۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے قریبی ساتھی اور وزیر تجارت ولبر راس کے جس روسی آف شور کمپنی میں شیئرز ہیں اس پر امریکہ نے پابندی لگائی ہوئی ہے۔

کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کے مشیر اسٹیفن برانف مین کی آف شور کمپنیوں کے ذریعہ ٹیکس بچانے کی خبر وزیراعظم کے لیے باعث شرمندگی بن گئی۔ جسٹن ٹروڈو نے انتخابی مہم میں ٹیکس چھپانے کے لیے آف شور کمپنیوں کے استعمال کو کافی تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

برطانیہ کی حکمران کنزرویٹو پارٹی کے سابق ڈپٹی چیئرمین لارڈ ایشکرافٹ نے بھی ٹیکس بچانے کے لیے قوانین کی پروا نہ کی اور آف شور کمپنی بنا ڈالی۔ یورپ میں نیٹو کے سپریم کمانڈر سابق امریکی جنرل ویزلے کلارک بھی ایل آن لائن گیمبلنگ کمپنی کے ڈائریکٹر تھے اور اس کمپنی کی ذیلی آف شور کپمنیاں بھی ہیں۔

جبکہ اردن کی سابق ملکہ نور کا نام بھی جرسی نامی جزیرے میں 2 ٹرسٹوں کی بینیفیشری کے طور پر سامنے آیا ہے۔ اس کے علاوہ معروف امریکی گلوکارہ میڈونا، پاپ سنگر بونو بھارتی اداکار امیتابھ بچن اور سنجے دت کی اہلیہ منیاتا دت نے بھی آف شور کمپنیوں میں سرمایہ کاری کی۔

یہ بھی پڑھیئے

پاناما پیپرز کے بعد پیراڈائز پیپرز سامنے آگئے

Comments are closed.

Scroll To Top