تازہ ترین
پارلیمنٹ کی بالادستی یقینی بنانے کے لئے (ن) لیگ نے پی پی سے تعاون مانگ لیا، ذرائع

پارلیمنٹ کی بالادستی یقینی بنانے کے لئے (ن) لیگ نے پی پی سے تعاون مانگ لیا، ذرائع

اسلام آباد: (22 فروری 2018) نواز شریف کو پارٹی صدارت سے نا اہل قرار دینے کے بعد حکمران جماعت نے پاکستان پیپلز پارٹی سے پارلیمنٹ کی بالادستی کو یقینی بنانے کے لئے تعاون مانگ لیا ہے۔

ذرائع کے مطابق اسلام آباد ایئر پورٹ کے اسٹیٹ گیسٹ ہاؤس میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی سے گورنر پنجاب رفیق رجوانہ اور سردار مہتاب نے ملاقات کی، ملاقات میں تینوں رہنماؤں نے نواز شریف کی پارٹی صدارت سے نااہلی سمیت ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ذرائع مسلم لیگ(ن) کے مطابق ملاقات میں لیگی رہنماؤں نے یوسف رضا گیلانی کو نواز شریف کا آصف زرداری کے لئے خصوصی پیغام دیا، ذرائع کا کہنا ہے کہ مسلم لیگ (ن) نے پارلیمنٹ کی بالادستی کو یقینی بنانے کے لیے پیپلز پارٹی سے تعاون کی درخواست کی ہے، جس پر یوسف رضا گیلانی نے پارٹی قیادت سے مشاورت کے بعد جواب دینے کے یقین دہانی کرائی ہیں۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ سب کو سپریم کورٹ کے فیصلے کااحترام کرناچا ہیے۔ اداروں کے ساتھ تصادم ملک کیلئے نقصان دہ ہوگا۔انتخابی اصلاحات کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے پر رد عمل دیتے ہوئے سابق صدرآصف علی زرداری کا کہنا تھا کہ جمہوریت کو نیچا دکھانے سے گر یز کرنا چاہیے۔ بدقسمتی سے نوازشریف نے محاذ آرائی کاراستہ اختیار کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پیپلزپارٹی جمہوریت اور آئین کے تحفظ کیلئے جدوجہد جاری رکھے گی۔واضح رہے کہ انتخابی اصلاحات کیس میں سپریم کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ ہر وہ شخص جو آرٹیکل 62 اور 63 کے تحت اہل نہیں وہ پارٹی صدارت کیلئے بھی نااہل ہے اور یہ پابندی نااہلیت کے دن سے شروع ہوگی اور جب تک نااہلیت برقرار ہے گی وہ پارٹی صدر نہیں بن سکتا۔

فیصلے کے مطابق کوئی نااہل شخص پارٹی صدر نہیں ہوسکتا۔ 28 جولائی 2017ء کو نااہل ہونے کے بعد بطور صدر پارٹی نواز شریف کے تمام اقدمات، اعمال اور ان کے جاری کردہ دستاویزت غیر قانونی ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

سپریم کورٹ نے نوازشریف کو پارٹی صدارت سے نااہل قرار دے دیا

الیکشن کمیشن نے نواز شریف کا نام پارٹی صدر کی حیثیت سے ہٹادیا

Comments are closed.

Scroll To Top