تازہ ترین
وزیراعلیٰ بلوچستان کا مہاجرین کی شہریت بارے وزیراعظم کے بیان پر تحفظات کا اظہار

وزیراعلیٰ بلوچستان کا مہاجرین کی شہریت بارے وزیراعظم کے بیان پر تحفظات کا اظہار

کوئٹہ: (18 ستمبر 2018) وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی جانب سے مہاجرین کی شہریت سے متعلق بیان پر کئی تحفظات ہیں۔ ملکی فیصلوں پر قوم کو اعتماد میں لینا ضروری ہے۔

بلوچستان اسمبلی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ بلوچستان نے افغان مہاجرین کو شہریت دینے سے متعلق وزیراعظم عمران خان کے بیان پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کے ہر ممالک کے اپنے قوانین ہوتے ہیں۔ مہاجرین سے متعلق موجود پہلے سے طے شدہ پالیسی کو آگے بڑھانے کی ضرورت ہے۔

اس سے قبل آج قومی اسمبلی کے اجلاس سے اپنے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے افغانیوں اور بنگالیوں کو شہریت دینے کامعاملہ پر قومی اسمبلی سے تجاویز طلب کیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کابٹن دبائے

وزیراعظم عمران خان نے کہا ملک میں پیدا ہونے والے بچے شہریت کا حق رکھتے ہیں۔ 1951 کے قانون کے تحت جوبچےیہاں پیدا ہوتے ہیں شہریت ان کا حق ہے کیونکہ یورپ سمیت دیگر ممالک میں بھی یہ قوانین ہیں ،اگر ہم آج ان کا فیصلہ نہیں کریں گے تو کب کریں گے، میں نے جو اعلان کیا وہ صرف کراچی سے متعلق تھا۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جومہاجرین عارضی طور پر آتے ہیں ان کے لیے الگ قانون ہے لیکن بنگلادیش سے آنے والے لوگ یہاں 45 سے 50 سال سے رہ ہے ہیں ان کا استحصال ہورہا ہے، نہ ان کو شہریت ملتی ہے اور نہ وہ واپس جاتے ہیں، ان کی نسلیں بڑھ چکی ہیں، نہ ہم ان کو ملک سے باہر بھیج سکتے ہیں نہ وہ ہمارے شہری ہیں وہ نان شہری بن چکے ہیں، انسانیت کے تقاضے پر کہہ رہا ہوں کہ وہ انسان ہیں اگر آج ان کا فیصلہ نہیں ہوا تو کب ہوگا؟عمران خان کاکہناتھا کہ کراچی میں اسٹریٹ کرائمز میں اضافہ بے روزگاری کی وجہ سےہے، اگر ان مہاجرین سے متعلق فیصلہ نہ کیا گیا تو شدید مسائل پیدا ہونگے، جو لوگ یہاں آبادہوگئے ہیں انہیں حقوق دینے پڑیں گے۔

عمران خان کاکہناتھا کہ بین الاقوامی قوانین کے تحت آپ مہاجرین کو زبردستی نہیں بھیج سکتے اس لیے مہاجرین کے جو یہاں پیدا ہوئے ان کے لیے کوئی پالیسی بنانا پڑے گی جبکہ یہ انسانی حقوق کا مسئلہ ہے، قوم کو کبھی نہ کبھی ان کا فیصلہ کرنا پڑے گا۔

خیال رہے کہ وزیرِاعظم نے گذشتہ دنوں کراچی میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ پاکستان میں پیدا ہونے والے افغانوں کے بچوں اور چالیس سال سے مقیم بنگالیوں کو شناختی کارڈز کے اجرا کیلئے وزارت داخلہ سے گزارش کروں گا۔ ان کا کہنا تھا کہ بنگالی چالیس سال سے پاکستان میں مقیم ہیں، یہ بھی انسان ہیں اور ان کے بھی حقوق ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

افغانیوں، بنگالیوں کو شہریت دینے کا فیصلہ نہیں کیا، وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان کی ایم کیو ایم کو شکایات دور کرنے کی یقین دہانی

 

Comments are closed.

Scroll To Top