تازہ ترین
وزیراعظم کا دیامر بھاشا اور مہمند ڈیمز کی جلد تکمیل پر زور دیا

وزیراعظم کا دیامر بھاشا اور مہمند ڈیمز کی جلد تکمیل پر زور دیا

اسلام آباد: (10 ستمبر 2018) وزیراعظم عمران خان سے چیئرمین واپڈا مزمل حسین نے ملاقات کی ہے۔ عمران خان کو واپڈا کے منصوبوں پر بریفنگ دی گئی۔

وزیر اعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائیٹ ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ آج چیئرمین واپڈا سے ملاقات کے دوران دیامر بھاشا اور مہمنڈ ڈیمز کی جلد تکمیل پر زور دیا۔ معاملے کی افادیت کے پیش نظر منصوبے کی نگرانی میں اپنے ذمے لے سکتا ہوں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کے حصے میں سالانہ 45 ملین ایکڑ فٹ پانی آتا ہے جس کا 80 فیصد 3 ماہ جبکہ بقیہ 20 فیصد باقی 9 ماہ میں آتا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان میں پانی کے صرف 185 ذخائر ہیں جن میں محض دو ڈیم بڑے ہیں۔ ہمارے مقابلے میں بھارت کے پاس 5000 آبی ذخائر ہیں جبکہ چین میں 4 ہزار بڑے ڈیمز سمیت مجموعی طور پر 84 ہزار آبی ذخائر موجود ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ ہمیں پاکستان کو بڑھتے ہوئے آبی بحران سے محفوظ بنانا ہے۔

اس سے قبل آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے چیف جسٹس ثاقب نثار سے ملاقات میں پاک فوج کی جانب سے ڈیم فنڈ کیلئے ایک ارب پچاس لاکھ روپے سے زائد کا عطیہ پیش کیا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے چیف جسٹس ثاقب نثار سے ملاقات میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک ارب پچاس لاکھ روپے سے زائد کا عطیہ پیش کیا ہے۔ ملاقات کے دوران آرمی چیف نے چیف جسٹسکو ایک ارب 50 لاکھ روپے سے زائد کا چیک دیا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق چیک پاک فوج کے افسران و جوانوں اور ویلفیئر آرگنائزیشن کی جانب سے دیا گیا ہے۔ افسران کی 2 دن اور جوانوں کی ایک دن کی تنخواہ عطیہ کی گئی۔

اس موقع پر آرمی چیف نے کہا کہ پاک فوج ایک قومی ادارے کی حیثیت سے قومی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کرتی رہے گی۔

جبکہ 09 ستمبر کو گورنر سندھ عمران اسماعیل نے اپنی ایک سال کی تنخواہ ڈیمز فنڈ میں عطیہ کرنے کا اعلان کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو درپیش چیلنجز میں سے ایک بڑا مسئلہ پانی ہے جس کا حل نکالنا بہت ضروری ہے کیونکہ پانی زندگی کی بنیادی ضرورت ہے۔

گورنر سندھ نے کہا کہ پانی کے مسئلے کا حل ڈیموں کی تعمیر میں مضمر ہے۔ اب بھی وقت ہے کہ اس حوالے سے باقاعدہ کام کیا جائے اور اس مسئلے کا حل نکالنے کیلئے اقدامات اٹھائے جائیں۔

عمران اسماعیل نے کہا کہ اگر درست وقت پر پانی کی کمی کے مسئلے پر غور و فکر نہ کیا گیا تو وہ وقت دور نہیں جب پانی کے ایک قطرے کا حصول بھی مشکل ہوجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں شدید آبی قلت پیدا ہونے سے قبل ڈیموں کی تعمیر نہایت ضروری ہے اور اس بارے میں حکومت کی جانب سے منصوبہ بندی کا آغاز کردیا گیا ہے کیونکہ ملک میں پانی ذخیرہ کرنے کی اشد ضرورت ہے۔عمران اسماعیل نے مزید کہا کہ اس سے قبل کسی نے ڈیموں کی تعمیر پر کوئی سنجیدہ کوشش نہیں کی اورنہ مسئلے سے نمٹنے کیلئے اقدامات اٹھائے لیکن موجودہ حکومت خاطرخواہ اقدامات کررہی ہے۔

قبل ازیں اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے اپنی پہلی تنخواہ ڈیم فنڈ میں دینے کا اعلان کیا۔ ڈیم فنڈ میں اپنا حصہ ڈالنے کے بعد اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے عوام سے ڈیم فنڈ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لینے کی اپیل کی۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے وزیراعظم اور چیف جسٹس ڈیم فند میں اپنی تنخواہ عطیہ کرنے کااعلان کیا۔

اسپیکر نے تمام پاکستانیوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے بچوں کے مستقبل کو بچانے کیلئے اس کار خیر میں بڑھ چڑھ کا حصہ لیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پانی انسانی زندگی کی بنیادی ضرورت ہے، ہمیں اس کی اہمیت کی قدر کرنی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیے

پچاس لاکھ گھروں کی تعمیر: وزیراعظم کی دو ہفتوں میں سفارشات پیش کرنے کی ہدایت

آئی ایم ایف کو خداحافظ :حکومت کاگاڑیوں،اسمارٹ فون، پنیرکی درآمدات بند کرنے پرغور

 

Comments are closed.

Scroll To Top