تازہ ترین
وزیراعظم نے ایئر یونیورسٹی ایرو اسپیس کیمپس کا سنگ بنیاد رکھ دیا

وزیراعظم نے ایئر یونیورسٹی ایرو اسپیس کیمپس کا سنگ بنیاد رکھ دیا

اسلام آباد (02 جنوری 2018) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ایئر یونیورسٹی ایرو اسپیس اینڈ ایوی ایشن کیمپس کا سنگ بنیاد رکھ دیا۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب میں پاک فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل سہیل امان بھی موجود تھے۔ جبکہ وفاقی وزرا اعلی، دفاعی اور سول افسران کے علاوہ مختلف تعلیمی اداروں کے سربراہان نے بھی اس تقریب میں شرکت کی۔

وزیراعظم نے یونیورسٹی کا سنگ بنیاد رکھا اور تختی کی نقاب کشائی بھی کی۔ اس موقع پر انہوں نے پاک فضائیہ کے سربراہ کے ساتھ مل کر کامرہ میں اس شاندار ادارے کی ترقی کے لیے دعا کی۔ ایئر وائس مارشل (ریٹائرڈ) فائز امیر، وائس چانسلر ایئر یونیورسٹی نے شرکا کو اس کیمپس کی چیدہ چیدہ خصوصیات کے بارے میں آگاہ کیا۔

ائیر مارشل احمر شہزاد، چیئرمین پاکستان ایرو ناٹیکل کمپلیکس کامرہ نے اپنے استقبالی خطاب میں نئے تعمیر شدہ ایوی ایشن سٹی کی چیدہ خصوصیات پرروشنی ڈالی جو کہ خطے میں ایوی ایشن کا مرکز بنے گا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ائیر چیف نے کہا کہ ائیر یونیورسٹی ائیرو سپیس اینڈ ایوی ایشن سنٹر کا قیام ایوی ایشن سٹی میں انڈسٹری اکیڈمی کی ہم آہنگی کے پاک فضائیہ کے وژن کی تعبیر ہے اور یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس کے قیام سے یہاں بہت بڑی تعداد میں بین الاقوامی اسکالرز اور طلبا آئیں گے جس سے ناصرف تعلیمی تبادلہ خیال ہوگا بلکہ پاکستان کی اقتصادی اور سفارتی سطح پر بھی پذیرائی ہوگی۔

یہ کیمپس خطے کی نئی جیو پولیٹیکل صورتحال سے نمبٹنے میں بھی کلیدی کردار ادا کرے گا۔ مجھے اعتماد ہے کہ حکومت کی سرپرستی میں پاک فضائیہ ایوی ایشن ٹیکنالوجی میں اپنے مقاصد حاصل کر لے گی یقینی طور پر یہ خود کفالت کی طرف ایک مثبت قدم ہے اور مجھے امید ہے کہ ایوی ایشن سٹی کامرہ کے جدید ملکی ساختہ پروگرامز سے نا صرف ملکی صنعت مضبوط ہو گی بلکہ غیر ملکی ایوی ایشن انڈسٹری کی ضروریات بھی پوری ہوں گی۔

انہوں نے کہا کہ ایوی ایشن انڈسٹری میں ہماری ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ کے مثبت نتائج پیدا ہوئے ہیں جس پر ہمیں فخر ہے۔ ہمارے انجینئرز اور تکنیکی عملے نے اپنے وسائل سے جدید صلاحیتیں حاصل کی ہیں۔اور مجھے یقین ہے کہ ہم اس رستے پر چلتے ہوئے مسافر بردار اور لڑاکا طیاروں کے علاوہ جدید ایویانکس آلات اور ہتھیار تیار کرسکیں گے۔

انہوں نے کہا کہ یہ آج کی ضرورت ہے اور ہم یہ صلاحیت حاصل کرنے کے لئے عزم صمیم رکھتے ہیں جس کی وجہ سے نا صرف پاکستان میں ہوا بازی کی صنعت کو فروغ ملے گا بلکہ ہماری معیشت بھی مستحکم ہو گی۔ معزز مہمانوں سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ میں ہوا بازی کی صنعت اور اعلیٰ تعلیم کے میدا ن میں پاک فضائیہ کی گراں قدر خدمات اور پاک فضائیہ کے سربراہ ائیر چیف مارشل سہیل امان کی ذاتی کوششوں اور پر خلوص کاوشوں کو سراہتا ہوں جن کے ذریعے ہم خود انحصاری کی منزل تک پہنچنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کو درپیش چیلنجزسے خود انحصاری کے حصول سے ہی نبرد آزما ہوا جا سکتا ہے جس کے لئے ماہر افرادی قوت کی ضرورت ہوتی ہے۔ اسی لئے ترقی یافتہ ممالک تعلیم اور افرادی قوت پر زیادہ ذور دیتے ہیں اسی تناظر میں حکومت پاکستان کے وژن 2025 میں نالج اکانومی کو ایک اہم مقام دیا گیا ہے اور حکومت نے بہترین افردی قوت کے حصول کے لئے تعلیم کے شعبے میں زیادہ سرمایہ کاری کی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ اگرچہ فنڈز کی فراہمی ہمارا کام ہے تاہم مجھے یقین ہے کہ طلباکو بہترین تعلیم فراہم کرنے کے لئے اساتذہ بھی اپنا کردار ادا کرتے رہیں گے۔ کامرہ کے مقام پر ایرو اسپیس اینڈ ایوی ایشن کیمپس کا قیام ایک اہم پیشرفت ہے جس کی اہمیت نا صرف ملکی بلکہ بین الاقوامی سطح پر بھی نظر آئیگی۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ ملکی اور بین الاقوامی کے ملنے سے ہماری ٹیکنالوجیکل بنیاد مزید مستحکم ہوگی۔

مجھے یقین ہے کہ ملکی سطح پر جدید ایوی ایشن مصنوعات کی تیاری سے ہماری قومی ضروریات بھی پوری ہوں گی اور ہماری معیشت بھی مستحکم ہوگی۔ حکومت پاکستان کی جانب سے میں آپ کو ایوی سٹی میں ہر طرح کے تعاون کی یقین دہانی کرواتا ہوں۔ ایوی ایشن سٹی پاک فضائیہ کا ایک ایسا تاریخی اقدام ہے جس میں مختلف جدید اور بہترین تعلیمی اور تحقیقی ادارے ہونگے جو ایوی ایشن کی صنعت میں خود کفالت کی منزل کو حاصل کرنے میں معاون ثابت ہوں گے۔

اس منصوبے کا اہم مرکز ایر یونیورسٹی ایرو سپیس اینڈ ایوی ایشن کیمپس ہوگا جسے بین الاقوامی ایوی ایشن یونیورسٹیز کے معیار کے مطابق بنایا گیا ہے جو مینٹینس،ایونکس اور سیمولیٹر جیسی جدید سہولیات سے لیس ہو گا۔ اس ایوی ایشن سٹی کا ایک اہم جزو ایوی ایشن ریسرچ اینڈ انڈیجینائزیشن اینڈ ڈیویلپمنٹ انسٹیٹیوٹ ہے جوجدید ٹیکنالوجی کے مختلف شعبہ جات میں تحقیق کا کام کرے گا۔

سرٹیفیکشن ایجنسی کا قیام بھی اس منصوبے کا ایک اہم حصہ ہے اس طرح کے منفرد ادارے دنیا کی بہترین فضائی افواج کا حصہ ہوتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیئے

وزیراعظم کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس جاری

سابق وزیراعظم سے سعودی ولی عہد کی ملاقات، مریم نواز کا ٹوئٹ

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top