تازہ ترین
نئی قومی اسمبلی کی تشکیل نو کا آئینی طریقہ کار کیا ہوگا؟

نئی قومی اسمبلی کی تشکیل نو کا آئینی طریقہ کار کیا ہوگا؟

اسلام آباد: (28 جولائی 2018) آئین کے آرٹیکل 91 کی شق دو کے تحت عام انتخابات کے 21 دن کے اندر قومی اسمبلی کا اجلاس بلانا لازمی ہے۔ نئی قومی اسمبلی کی تشکیل نو کا آئینی طریقہ کار کیا ہوگا؟

آئینی طریقہ کار کے مطابق حتمی نتائج کے بعد الیکشن کمیشن آزاد امیدواروں کو تین دن کے اندر کسی بھی جماعت میں شمولیت کا موقع دے گا۔ کسی بھی جماعت میں شمولیت کرنے والے اسی سیاسی جماعت کا حصہ تصور کیے جائیں گے۔ آزاد امیدواروں کی شمولیت کے بعد الیکشن کمیشن سیاسی جماعتوں کو ان کی تعداد کے حساب سے خواتین اور غیر مسلم نشستیں الاٹ کی جائیں گی۔الیکشن کمیشن کے نوٹیفکیشن کے بعد صدر مملکت قومی اسمبلی کا اجلاس طلب کریں گے۔ روایت کے عین مطابق قومی اسمبلی کا پہلا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی صدارت میں ہوگا۔ اجلاس میں ایاز صادق خود سمیت تمام ارکان سے حلف لیں گے۔ حلف کے بعد اسپیکر نئے اسپیکر کا انتخاب کرائیں گے۔نومنتخب اسپیکر سے ایاز صادق حلف لیں گے اور اپنی نشست حوالے کریں گے۔ نومنتخب اسپیکر ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب کرائیں گے۔ ڈپٹی اسپیکر کے انتخاب کے بعد اسپیکر وزیراعظم کے انتخاب کے شیڈول کا اعلان کریں گے۔

یہ بھی پڑھیے

الیکشن 2018 کے کئی بڑے اپ سیٹ

پی ٹی آئی کا حکومت سازی کےلیے کمیٹیاں تشکیل دینے کافیصلہ

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top