تازہ ترین
ممبئی حملے: بھارت، اسرائیل اور امریکا کی پاکستان کے خلاف سازش

ممبئی حملے: بھارت، اسرائیل اور امریکا کی پاکستان کے خلاف سازش

ویب ڈیسک: (19 فروری 2018) جرمنی کے مصنف ایلیاس ڈیوڈسن نے اپنی کتاب میں انکشاف کیا ہے کہ ممبئی حملے پاکستان کو بدنام کرنے کیلئے بھارت، امریکا اور اسرائیل کی مشترکہ سازش تھی۔ تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اسلام آباد کو چاہیئے کہ وہ نئی دہلی کے منصوبے کو عالمی عدالت انصاف میں اٹھائےاور مقامی میڈیا کا احتساب کرے۔

ممبئی حملوں کے حوالے سے جرمنی کے معروف مصنف اورصحافی ایلیس ڈیوڈسن نے اپنی نئی آنے والی کتاب میں ثابت کردیا ہے کہ دہلی سرکار اور بھارتی اداروں نے ممبئی حملوں کی تحقیقات مسخ کیں۔ بھارتی عدلیہ انصاف کی فراہمی اور سچائی سامنے لانے کی اپنی ذمہ داری پوری کرنے میں ناکام رہی۔ مصنف کے مطابق ممبئی حملوں کافائدہ ہندو انتہا پسنداور قوم پرستوں کوہوا۔ ان حملوں کے نتیجے میں ہیمنت کرکرے اور دوسرے پولیس افسران کو راستے سے ہٹایا گیا۔ انتہا پسند تنظیموں کے ساتھ ساتھ نہ صرف بھارت بلکہ امریکا اور اسرائیل کے کاروباری، سیاسی اور فوجی عناصرکو بھی اپنے مقاصد پورے کرنے کیلیے ان حملوں کا فائدہ پہنچا۔

ایلیس ڈیوڈسن نے اپنی کتاب بیٹریل آف انڈیا میں کہا کہ ممبئی دہشت گرد حملوں کے حقائق چھپانا بھارتی سیکیورٹی و انٹیلی جنس اداروں کی نااہلی نہیں بلکہ منصوبہ بندی کے تحت حقائق میں جان بوجھ کر کی گئی ہیرا پھیری تھی۔ مصنف کے مطابق کیس کی عدالتی کارروائی بھی غیرجانبدار نہیں تھی ۔بلکہ اہم ثبوت اور گواہوں کو نظرانداز کیا گیا۔ ممبئی حملوں کی منصوبہ بندی و عمل درآمد کی سازش میں بھارت کے ساتھ امریکا اور اسرائیلی بھی ملوث رہے۔ مصنف نےممبئی حملوں کو خفیہ آپریشنز طرز کا حملہ قرار دیا۔

ایلیس ڈیوڈسن کی تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی کہ ممبئی حملوں کے ان متاثرین اور گواہوں کے بیانات نہیں لیے گئے جو واقعے کے سرکاری بیانیے کو اپنانے پر تیار نہ ہوئے۔ کتاب میں بتایا گیا کہ کئی گواہوں کو سکھایا گیا کہ کس طرح انہیں سرکاری موقف اختیار کرنا ہے۔ دہشت گردوں کے سہولت کارایسافون نمبراستعمال کرتے رہے جوامریکامیں موجود تھا۔ اجمل قصاب کے اقبالی بیان کے مطابق وہ ممبئی سے حملوں سے بیس دن پہلے گرفتار کیا گیا تھا اور پھر ملوث کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیے

ممبئی حملہ ڈرامہ تھا، امریکی اسکالر کا انکشاف

بھارت ممبئی حملہ کیس سے متعلق شواہدفراہم کرنےپرآمادہ

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top