تازہ ترین
معصوم بچی کے بہیمانہ قتل پر جنگل کے جانور بھی شرمندہ ہیں،امیر جماعت اسلامی

معصوم بچی کے بہیمانہ قتل پر جنگل کے جانور بھی شرمندہ ہیں،امیر جماعت اسلامی

قصور: (11 جنوری 2018) امیر جماعت اسلامی پاکستان کا کہنا ہے کہ زینب ملک کے کرپٹ اور ظالمانہ سسٹم کے خلاف اللہ کے حضور فریادی بن گئی ہے،ہم کم سن بچی کے قاتلوں کو سزا ملنے تک آرام سے نہیں بیٹھیں گے۔

تفصیلات کے مطابق امیر جماعت اسلامی سراج الحق قصور پہنچے جہاں انہوں نے زیادتی کے بعد قتل ہونے والی زینب کے گھر جاکر اہل خانہ سے واقعہ پر دلی تعزیت ،دکھ اور افسوس کا اظہار کیا جب کہ غم زدہ والدین سے ملاقات کرکے زینب کے قاتلوں کی گرفتاری کے لیے تمام ترتعاون کی یقین دہانی اور سوگواران کے لیے صبرجمیل کی دعا کی۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ زینب ملک کےکرپٹ اورظالمانہ سسٹم کےخلاف اللہ کےحضورفریادی بن گئی ڈرتاہوں کہ اس واقعے کے بعد کہیں ہم پر آسمان نہ گرپڑے۔

سراج الحق نے کہا کہ رائیونڈ محل سےقصورصرف ایک گھنٹے کے فاصلے پر ہے اور پانچ دن سے بچی کی رشتے دار تھانے میں فریادی تھے لیکن کسی نے کارروائی نہ کی،اس ملک میں سابق وزیراعظم کے قافلے نے گجرات میں ایک بچے کو گاڑی تلے کچل کرموت کے گھاٹ اتار دیا اور کوئی غم زدہ خاندان کے گھر نہیں گیا ،ملک سے اسٹیٹس کو کلچر اورظالم حکمرانوں کو اقتدار سے ہٹانے تک ایسے واقعات کا تدارک کرنا مشکل ہے۔سراج الحق نے کہا کہ زینب کےساتھ جوکچھ کیاگیااس پرجانوربھی شرمندہ ہیں قصور میں اس قسم کا یہ بارہواں واقعہ ہےجب کہ وزیراعلیٰ پنچاب شہباز شریف رات کے اندھیرے میں زینب کے گھرپہنچے اب ایک ہی راستہ ہے کہ ہم ظالموں کوانجام تک پہنچادیں۔

دوسری جانب پولیس نے سات سال بچی کے لرزہ خیز قتل کے الزام میں دس مشکوک افراد کو حراست میں لیکر تفتیش کا آغاز کردیا ہے جبکہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے بنائی تصویر آج گھر گھر تقسیم کی جائے گی۔وزیراعلیٰ پنجاب نے ملزم کی گرفتاری میں مدد دینے والے کے لئے ایک کروڑ انعام کا اعلان کرتے ہوئے مقدمے میں دہشت گردی کی دفعات شامل کرنے کی ہدایت کی ہیں ۔

دوسری جانب ذیادتی کے بعد قتل کی جانے والی زینب اور ننھی بچی کے قتل کے خلاف احتجاج کرنے والے تین افراد کے جاں بحق ہونے کے بعد شہر کی فضا سوگوار ہیں اور نظام زندگی معطل ہیں ۔ پولیس اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کے بعد دوسرے روز بھی حالات بدستور کشیدہ ہیں، قصور کا فیروز پور روڈ ٹریفک کی آمد و رفت کے لئے بند ہے اور مظاہرین کا کالی پل چوک پر دھرنا جاری ہے جب کہ قصور کا دوسرے شہروں سے زمینی راستہ بھی منقطع ہوگیا ہے۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

مشتعل مظاہرین نے ڈسٹرکٹ اسپتال کے سامنے ٹائر نذرآتش کر کے شدید احتجاج کیا اور توڑ پھوڑ کے دوران اسپتال کا مرکزی دروازہ بھی توڑ دیا ہے، مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ معصوم بچی کے ملزمان کو فوری گرفتار کر کے سخت سے سخت سزا دی جائے۔ہنگامہ آرائی کے خدشے کے پیش نظر ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال فوری طور پر خالی کرالیا گیا، اِن ڈور، آؤٹ ڈور، ایمرجنسی اور دیگر وارڈز کو تالے لگا دیئے گئے جب کہ ڈیوٹی دینے والے ڈاکٹرز اور دیگر عملہ بھی چلا گیا ہے، اسپتال کی بندش کے بعد مریضوں کے رشتہ دار انہیں واپس گھروں کو جاچکے ہیں۔وکلا کی جانب سے قصور میں بچی کے قتل کے خلاف ہڑتال اور یوم سیاہ منایا جارہا ہے، اسلام آباد بار ایسوسی ایشن کی جانب سے بھی ہڑتال کی جارہی ہے جب کہ لاہور ہائی کورٹ بار کے صدر چوہدری ذوالفقار کا کہنا ہے کہ وکلا نے عدالتوں کا بائیکاٹ کر رکھا ہے، اور بار رومز پر کالے جھنڈے لہرائیں جارہے ہیں جبکہ پنجاب بار کونسل کا کہنا ہے کہ مقتولہ زینب کے والدین کو مفت قانونی معاونت فراہم کی جائے گی۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

وکلا کی جانب سے عدالتی کارروائیوں کا بائیکاٹ کیاجارہا ہے جبکہ تاجر برادری کی جانب سے شہر میں دوسرے روز بھی شٹر ڈاؤن ہڑتال کی جارہی ہے۔دوسری جانب گزشتہ روز پولیس فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے شعیب اور محمد علی کا پوسٹ مارٹم کرلیا گیا جس کی رپورٹ آج گیارہ بجے دی جائے گی۔

رات گئے وزیراعٰلی پنجاب شہباز شریف مقتولہ زینب کے گھر پہنچے اور اہل خانہ سے تعزیت کا اظہار کیا، شہباز شریف نے متاثرہ خاندان کو قاتلوں کی جلد گرفتاری کی بھی یقین دہانی کرائی۔ وزیراعلیٰ پنجاب کی زینب کے گھر آمد کو خفیہ رکھا گیا۔شہباز شریف کے ہمراہ ترجمان پنجاب حکومت اور ڈی پی او قصور زاہد نواز مروت بھی موجود تھے۔گزشتہ روز آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی جانب سے زینب کے قتل کی سخت مذمت کی گئی ہے، ان کا کہنا تھا کہ ملزمان کو انصاف کے کٹہرے میں لا کر عبرتناک سزا دی جائے، آرمی چیف نے زینب کے والدین کی اپیل پر پاک فوج کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملزم کی فوری گرفتاری کیلئے پاک فوج سول انتظامیہ کی ہر ممکن مدد کرے۔

یہ بھی پڑھیے

قصور: مظاہرین پر فائرنگ کے حوالے سے دو مقدمات درج

قصور: مظاہرین پر پولیس فائرنگ سے جاں بحق افراد کی تعداد 3ہوگئی

Comments are closed.

Scroll To Top