تازہ ترین
لاپتہ افراد کیس: سیکرٹری داخلہ سندھ فوری طور پر عدالت طلب

لاپتہ افراد کیس: سیکرٹری داخلہ سندھ فوری طور پر عدالت طلب

کراچی:(19 دسمبر 2018)سندھ ہائی کورٹ نے لاپتہ افراد کیس میں سیکرٹری داخلہ سندھ کو فوری طور پر طلب کر لیا ہے، عدالت نے ریمارکس دیئے ہیں کہ لاپتہ افراد کے اہلخانہ رل رہے ہیں،سیکرٹری داخلہ سندھ پیش نہیں ہورہے،ایسانہ ہوکوئی اورحکم نامہ جاری کرناپڑے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں لاپتا افرادکی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت ہوئی جس میں لاپتا افرادکی بازیابی سے متعلق کیسز میں سیکرٹری داخلہ نے خود پیش ہونے کے بجائے ایڈیشنل سیکرٹری کو بھیج دیا۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

سیکرٹری داخلہ کی عدم پیشی پر عدالت کی جانب سے برہمی کا اظہار کیا گیا عدالت نے ریمارکس دیئے کہ لاپتا افراد کے اہلخانہ خوار ہورہے ہیں، بلانے پر سیکرٹری داخلہ بھی پیش نہیں ہوئے، ایسا نا ہو ہمیں کوئی اور حکم نامہ جاری کرنا پڑے۔

بعد ازاں عدالت نے سیکرٹری داخلہ سندھ کو فوری طلب کرلیا، یاد رہےعدالت نے محکمہ داخلہ، پولیس اور دیگر کی جانب سے لاپتا افرادکے معاملے پر موثر اقدامات نا کرنے پر سیکرٹری داخلہ کوبھی طلب کیا تھا۔اس سے قبل چودہ نومبر کو ہونے والی سماعت میں سندھ ہائی کورٹ نے 70 سے زائد لاپتا افرادکی بازیابی سے متعلق درخواستوں کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے پولیس رپورٹ پر بھی عدم اطمینان کا اظہار کیا۔ عدالت نے سیکریٹری داخلہ سندھ، سربراہ جے آئی ٹی اور پی ٹی ایف کو ذاتی حیثیت میں طلب کیا تھا۔

جسٹس نعمت اللہ پھلپھوٹو نے ریمارکس دیئے کہ پولیس ہمیشہ روایتی رپورٹس پیش کرتی ہے،درجنوں اجلاس کے بعد بھی جے آئی ٹی اور پی ٹی ایف کی کارکردگی زیرو ہے۔جسٹس کے کے آغا نے ریمارکس دیئے کہ صوبائی ٹاسک فورس اور جے آئی ٹی عدالت کو حقائق سے آگاہ نہیں کررہی۔پولیس رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ لاپتا شہری شعیب غفران ڈیرہ غازی خان میں پولیس مقابلے میں مارا گیا ہے۔جسٹس کے کے آغا نے ریمارکس دیے کہ پی ٹی ایف کے مطابق شعیب غفران کا سراغ نہیں ملا۔ عدالت نے حکم دیا کہ جے آئی ٹی اور پی ٹی ایف تمام کیسوں کی الگ الگ جانچ پڑتال کریں۔

یہ بھی پڑھیے

میٹرو کرپشن کیس: نیب تیسری بار بھی ریفرنس پیش نہ کرسکا

چیف جسٹس کا تمام نجی اسکولوں کی فیسوں میں کمی کا حکم

 

Comments are closed.

Scroll To Top