تازہ ترین
لاشوں کو اسپتال منتقل کرنے کے لیے رکشہ ایمبولینس سروس کا آغاز

لاشوں کو اسپتال منتقل کرنے کے لیے رکشہ ایمبولینس سروس کا آغاز

لدھیانہ:(24 ستمبر 2018) بھارت میں لاشوں کو اسپتال منتقل کرنے کے لیے رکشہ ایمبولینس سروس کا آغاز کیا گیا ہے۔

بھارتی شہر لدھیانہ میں ایمبولینسز کی کثیر تعداد کو پیش نظر رکھتے ہوئے گورنمنٹ ریلوے پولیس کی جانب سے شہر بھر میں نامعلوم لاشوں کو اسپتال منتقل کرنے کے لیے ایک ٹیم تشکیل دی گئی ہے۔ چار افراد پر مبنی یہ ٹیم رکشے کے ذریعے لاشوں کو اسپتال پہنچاتی ہے، انہیں شہر میں ’رکشا ایمبولینس‘ کے نام سے پہچانا جاتا ہے۔

بھارتی میڈیا رپورٹس کے مطابق رکشا ایمبولینس ٹیم کے ایک فرد بوبی فخر نے بتایا کہ انہوں نے اپنے رکشے میں لاشوں کو اسپتال منتقل کرنے کا کام پچیس سال قبل شروع کیا تھا اورتب سے اب تک وہ گیارہ ہزار تین سو لاشیں لدھیانہ سول اسپتال پہنچا چکے ہیں۔

بوبی فخرنے بتایا کہ ایک اوسط اندازے کے مطابق لدھیانہ کے ریلوے ٹریک سے ہر سال تقریبا ڈھائی سولاشیں ملتی ہیں جن کی موت کی وجہ حادثات یا خودکشی ہوتی ہے۔

رکشا ایمبولینس ٹیم کے سربراہ بوبی فخر اور ان کے ساتھی راجو، برپرتاپ اور جندرکا کہنا ہے کہ ہر سال کی طرح اس سال بھی وہ اب تک دو سو ساٹھ نامعلوم افراد کی لا شیں سول اسپتال منتقل کر چکے ہیں، اور ناصرف انہوں نے لاشیں اسپتال پہنچائی ہیں بلکہ تمام لاشوں کے آخری رسومات کے انتظامات بھی انہوں نے بھرپور ذمہ داری کے ساتھ ادا کیے ہیں۔

بوبی فخر کا کہنا ہے کہ کیونکہ ریلوے انتظامیہ کے پاس کوئی اپنی ایمبولینس موجود نہیں ہے اس لیے گورنمنٹ ریلوے پولیس کو جب کوئی لاش دکھائی دیتی ہے تووہ فورا انہیں (رکشا ایمبولینس ٹیم کو) جائے وقوعہ پر بلاتے ہیں۔ ایک لاش کو اسپتال منتقل کرنے پر جی آر پی، رکشا ایمبولینس کی پوری ٹیم کو صرف پانچ سو روپے دیتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

دنیا کے سب سے بڑے مسافر طیارے کی تصویر جاری کردی گئی

کوہ پیماکوبچانےکاآپریشن:روسی صدر کاپاکستانیوں کےلیےآرڈر آف فرینڈشپ اعزاز

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top