تازہ ترین
روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت میں اضافے کا نوٹس

روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت میں اضافے کا نوٹس

اسلام آباد: (14 جولائی 2017) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت میں حالیہ اضافے کا سخت نوٹس لیتے ہوئے اسٹیٹ بینک سے انکوائری رپورٹ طلب کرلی ہے۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کا اجلاس قیصر شیخ کی زیرصدارت ہوا۔ اجلاس کے آغاز پر کمیٹی کے رکن اسد عمر اور چیئرمین کمیٹی قیصر احمد شیخ کے درمیان دلچسپ جملوں کا تبادلہ ہوا۔ اسد عمر نے کہا کہ آج ’’قدم بڑھاؤ نواز شریف ہم تمھارے ساتھ ہیں‘‘ اجلاس تھا، اس لیے ارکان لیٹ ہیں۔ جس پر قیصر شیخ نے کہا کہ آپ نے ایسے ہی رولا ڈالا ہوا ہے، سات آٹھ ماہ انتظار کر لیں۔

چیئرمین ایف بی آر طارق پاشا نے کمیٹی کو بتایا کہ ٹیکس وصولیوں کی تفصیلات ابھی صوبائی دفاتر سے معلومات آنا باقی ہیں۔ 17 جولائی تک تفصیلات مکمل ہو نگی۔ اجلاس کے دوران اسدعمر نے کہا کہ قانون میں امتیاز کیوں برتا جا رہا ہے؟  کیا پانامہ لیکس میں صرف شریف فیملی کا نام ہے؟ اس میں باقیوں کے نام بھی ہیں ان سے بھی تحقیقات ہونی چاہیے۔

اجلاس میں چیئرمین ایس ای سی پی کے خلاف کیس کا معاملہ بھی زیر بحث آیا۔ اسد عمر نے کہا کہ سپریم کورٹ کے حکم پر چیئرمین ایس ای سی پی پر مقدمہ قائم ہواتھا۔ انہیں اب تک معطل کیوں نہیں کیا گیا؟ چیئرمین کمیٹی ان کی معطلی کے حوالے سے رولنگ دیں۔

چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ معاملہ عدالت میں ہونے کی وجہ سے کوئی رقلنگ نہیں دی جاسکتی۔

اس موقع پر طلال چوہدری نے کہا کہ چیئر مین ایس ای سی پی کو ٹرائل کا مکمل حق ہے۔ کمیٹی نے کیس کے بعد چیئرمین ایس ای سی پی کے مستقبل بارے رولن کیلئے قانونی رائے طلب کر لی۔

اجلاس میں روپے کی قدر میں کمی کے معاملے کا نوٹس لے لیا۔ کمیٹی نے روپے کی قدر میں کمی پر اسٹیٹ بینک سے انکوائری رپورٹ طلب کر لی۔ چیئر مین کمیٹی نے کہا کہ کمیٹی کو معلوم ہونا چاہیے کہ روپے کی قدر میں اچانک کمی کی وجوہات کیا ہیں۔ کمیٹی نے ایف بی آر سے تاجروں کے ریفنڈز سے متعلق تفصیلات طلب کر لیں۔

یہ بھی پڑھیے

پاکستان میں معاشی ترقی کی شرح 5.3 فیصدکے لگ بھگ رہےگی، آئی ایم ایف رپورٹ

پاکستان نے سیاسی عدم استحکام کی بہت بڑی قیمت ادا کی ہے، احسن اقبال

پاکستان نے سیاسی عدم استحکام کی بہت بڑی قیمت ادا کی ہے، احسن اقبال

Comments are closed.

Scroll To Top