تازہ ترین
فیوچرٹورپروگرام یا آئی سی سی نیابگ فور

فیوچرٹورپروگرام یا آئی سی سی نیابگ فور

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے سنگاپورمیں دو روزہ خصوصی اجلاس میں دوہزارانیس سے تئیس تک نئے فیوچرپروگرام کوحتمی شکل دی گئی۔جس میں نوممالک کے درمیان ٹیسٹ چیمپئن شپ اورتیرہ ملکوں کی ون ڈے لیگ اوراسی سائیکل کے لئے ٹی ٹوئنٹی شیڈول شامل ہے۔مجوزہ شیڈول فروری دوہزاراٹھارہ کوچیف ایگزیکٹیوکمیٹی اورپھرایگزیکٹیوبورڈ کی منظوری کے بعدطے ہوجائے گا۔Image result for pakistan cricketٹیسٹ چیمپئن شپ کے تحت دوسالہ سائیکل کے دوران ہرٹیسٹ ملک چھ ممالک سے ہوم اوراوے کی بنیاد پر سیریزکھیلے گا۔سائیکل کے اختتام پرپوائنٹس ٹیبل پردوسرفہرست ٹیموں کے درمیان لارڈز گراؤنڈ پرفائنل کھیلاجائے گا۔ جسے جیتنے والی ٹیم اگلے دوسال کیلئے ٹیسٹ چیمپئن کامقام حاصل کرلے گی۔ون ڈے لیگ میں تیرہ میں سے آٹھ ممالک ہوم اوراوے کی بنیاد پرتین میچوں پر مبنی سیریز میں مدمقابل ہوں گے۔ آئی سی سی ون ڈے لیگ ورلڈکپ دوہزارتئیس کا کوالیفائنگ ایونٹ بھی ہوگا۔ جس میں ٹاپ دس ٹیمیں شرکت کی اہل قرار پائیں گی۔Image result for pakistan cricket
مجوزہ ایف ٹی پی بگ فور کی نئی شکل کی صورت میں سامنے آیاہے۔ جس میں سابق بگ تھری بھارت،انگلینڈ اورآسٹریلیا کے ساتھ جنوبی افریقا کوبھی شامل کیاگیاہے۔ بھارتی ٹیم اپنے ساٹھ فیصد سے زائد میچز انہیں تین ٹیموں کے ساتھ کھیلے گی۔انہی چارٹیموں کوزیادہ میچز دیئے گئے ہیں۔ شیڈول میں اپریل مئی کے دوران کوئی سیریز نہ رکھ کرآئی پی ایل کوکلینڈرکاحصہ تسلیم کرلیاگیاہے۔ اس کیلئے اوپن ونڈو فراہم کردی گئی ہے۔دوسالہ ابتدائی دوسائیکلز میں انگلینڈ کوسب سے زیادہ چھیالیس ٹیسٹ ،اکسٹھ اکسٹھ ون ڈے اورٹی ٹوئنٹی میچزملے ہیں۔ویسٹ انڈیز باسٹھ ون ڈے اور بھارت اکسٹھ ٹی ٹوئنٹی کھیلے گا۔ بنگلہ دیش کوپاکستان سے زائد پینتیس ٹیسٹ ملیں گے۔زمبابوے چالیس، افغانستان اکتالیس اورآئرلینڈ بیالیس گرین شرٹس سے زیادہ ون ڈے میچز کھیلیں گے۔عالمی ایونٹس کا شیڈول انڈین پریمیئر لیگ کے بعد رکھتے ہوئے تمام کرکٹرزکی دستیابی ممکن بنانے کا اہتمام۔ فوٹو : اے ایف پیگرین شرٹس ٹیم پانچ ممالک کے خلاف اٹھائیس ٹیسٹ اوراڑتیس اڑتیس ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلے گی۔جس میں بھارت کے ساتھ کوئی باہمی سیریز شیڈول نہیں ہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ بھارت کے ساتھ باہمی سیریز کا تنازع آئی سی سی ڈسپیوٹ کمیٹی میں لے گیاہے۔ اورپی سی بی نے سلاٹ میں انیس میچز کی جگہ اوپن رکھی ہے۔ اگرڈسپیوٹ کمیٹی کافیصلہ پاکستان کے حق میں آیا۔تویہ میچزاس کے ساتھ ہوں گے۔ پاکستان کے خلاف فیصلہ کی صورت میں یہ کسی دوسری ٹیم ممکنہ طور پرجنوبی افریقا سے ہوں گے۔Related image
پاکستان کی بیشترسیریزدوٹیسٹ پرمبنی ہیں۔ اس طرح پاکستان کے ٹیسٹ میچزکی تعداد مزید کم ہوجائے گی۔پی سی بی نے ایف ٹی پی میں بڑے ممالک کی اجارہ داری کی خلاف کوئی آواز نہیں اٹھائی۔اوربھارت کے ساتھ انیس میچز کا سلاٹ اوپن رکھاہے۔ جس میں یہ امرمد نظر نہیں رکھاگیاکہ تمام ٹیموں کا پروگرام منظور ہونے کے بعداگرڈسپیوٹ کمیٹی نے پاکستان کے خلاف فیصلہ دیا۔تب بھارت سے میچز کا سلاٹ پرکرنے کیلئے کونسی ٹیم دستیاب ہوگی۔ٹیمیں دستیاب نہ ہونے پرپاکستان اپنے سائیکل کے دوران چھ کے بجائے پانچ ٹیموں سے ہی کھیل سکے گا۔اوراس میچز کی تعداد نمایاں طور پر کم ہونے سے ٹیسٹ چیمپئن شپ فائنل میں رسائی کاامکان بھی کم ہوجائے گا۔Image result for pakistan cricketتیرہ ممالک پر مبنی آئی سی سی ون ڈے لیگ کا شیڈول بھی طے کیاگیا۔جس میں افغانستان اورآئرلینڈ سمیت بارہ ٹیسٹ ممالک اورایسوسی ایٹ ممالک کی ٹاپ ٹیم شامل ہوگی۔ تین سالہ سائیکل کے دوران آٹھ ملکوں کے درمیان تین میچز کی ہوم اوراوے سیریز کھیلی جائیں گی۔ ون ڈے لیگ ورلڈکپ دوہزارتئیس کا کوالیفائنگ ٹورنامنٹ بھی ہوگا۔ جس کی دس ٹاپ ٹیمیں میگا ایونٹ میں شرکت کی حقدار ہوں گی۔Image result for pakistan cricketنئے ایف ٹی پی کے آغاز کے ساتھ مکمل سیریز اورپانچ ٹیسٹ کی سیریز کم ہوجائیں گی۔ ایشیزکے علاوہ صرف بھارت،انگلینڈ کے درمیان پانچ ٹیسٹ کی سیریز شیڈول ہے۔جبکہ انگلینڈ ،جنوبی افریقا اورآسٹریلیااوربھارت کی تین سیریز چارٹیسٹ پرمبنی ہوں گی۔

پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی

ٹیسٹ اورون ڈےلیگ کا جلد آغاز

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top