تازہ ترین
فیض آباد مظاہرین کا گھیراؤ کرلیا گیا

فیض آباد مظاہرین کا گھیراؤ کرلیا گیا

اسلام آباد: (23 نومبر 2017) فیض آباد میں جاری تحریک لبیک کے دھرنے کے خاتمے کیلئے انتظامیہ کی جانب سے ایکشن پلان مرتب کرلیا گیا ہے۔ پولیس، رینجرز اور ایف سی نے دھرنے کا محاصرہ کرلیا ہے۔ فیض آباد انٹرچینج جانے والے تمام راستے سیل کردیئے گئے ہیں۔

فیض آباد انٹرچینج پر تحریک لبیک کا دھرنا 18ویں روز بھی جاری ہے۔ دھرنے کے شرکاء تاحال شاہراہیں بند کر کے بیٹھے ہوئے ہیں جس سے جڑواں شہروں کے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ فیض آباد کے اردگرد نظام زندگی مفلوج اور کاروباری سرگرمیاں معطل ہیں۔

سپریم کورٹ کی ہدایت کی روشنی میں پولیس، رینجرز اور ایف سی کے دستوں نے فیض آباد انٹرچینج کا گھیراﺅ کر لیا ہے اور دھرنے کی طرف جانے والے تمام چھوٹے بڑے راستے خاردار تاریں، کنٹینرز اور بلاک رکھ کر بند کر دیئے ہیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

دھرنے میں شمولیت کیلئے جانے اور دھرنے سے نکلنے والوں کو گرفتار کیا جارہا ہے۔ اب تک 100 سے زائد افراد کو گرفتار کرکے راولپنڈی اور اسلام آباد کے مختلف تھانوں میں منتقل کردیا گیا ہے، جبکہ دھرنے کے شرکاء کیلئے کھانے اور دیگر سامان کی ترسیل کو بھی بند کردیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق حکومت نے دھرنے کے خاتمے کیلئے مذاکرات کا سلسلہ ختم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ دھرنے کے شرکاء کو رضاکارانہ طور پر علاقہ خالی کرنے کی وارننگ دی جائے گی۔ پر امن طور پر دھرنا ختم نہ کرنے کی صورت میں شرکاء کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی جس کیلئے تمام انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

اس سے قبل اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال کا کہنا تھا کہ حکومت کسی صورت دھرنے والوں کے ناجائز مطالبات کو تسلیم نہیں کرے گی۔ ہمارے پاس دھرنے والوں کے سامنے سرنڈر کرنے کا کوئی آپشن نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیے

دھرنے والوں کے ناجائز مطالبات کسی صورت تسلیم نہیں کریں گے، احسن اقبال

اسلام آباد: فیض آباد انٹرچینج پر مذہبی جماعتوں کا دھرنا 18ویں روز بھی جاری

 

Comments are closed.

Scroll To Top