تازہ ترین
غزل گائیک استاد امانت علی خان کو دنیا سے بچھڑے 44 برس بیت گئے

غزل گائیک استاد امانت علی خان کو دنیا سے بچھڑے 44 برس بیت گئے

ویب ڈیسک:(17 ستمبر 2018) نامور کلاسیکل و غزل گائیک اور پٹیالہ گھرانے کے لیجنڈ استاد امانت علی خان کو دنیا سے بچھڑے چوالیس برس بیت گئے ہیں۔، ان کی غزلیں اورگیت آج بھی مداحوں کے کانوں میں رس گھولتے ہیں۔

پنجاب کے پٹیالہ گھرانہ سے تعلق رکھنے والے مذکورہ لیجنڈ نے انیس سو بائیس میں بھارت کے صوبہ پنجاب کے علاقےہوشیار پور میں پیدا ہوئے۔استاد امانت علی خان تقسیم ہند کے بعد پاکستان آئے اور لاہور میں ریڈیو پاکستان سے اپنے فنی سفر کا آغاز کیا ۔انہوں نے گائیکی کی تربیت اپنے والد سے حاصل کر کے ملی نغموں ، غزلوں اور کلاسیکل گیتو ں میں شہرت کی ۔

استاد امانت علی کے مشہور ملی مغموں اور غزلوں میں اے وطن پیارے وطن۔چاند میری زمیں پھول میرا وطن، انشاء جی اٹھو، اے میرے پیارکی خوشبو، یہ آرزو تھی، موسم بدلا، یہ نہ تھی ہماری قسمت ،کب آئو گے ، ہونٹوں پہ کبھی ان کے وغیرہ اب بھی زبان زد عام ہیں۔استاد امانت علی خان کو اپنی شاندار خدمات پر پرائیڈ آف پرفارمنس کا اعزاز سے بھی نوازا گیا۔استاد امانت علی خان انیس سو چوہتر میں باون سال کی عمرمیں انتقال کر گئے۔

یہ بھی پڑھیے

ادیب، ڈرامہ نگاراور نثرنگار اشفاق احمد کو دنیا سے رخصت ہوئے14 سال بیت گئے

گلوکار حبیب ولی محمد کو دنیا سے رخصت ہوئے 4 سال بیت گئے

Comments are closed.

Scroll To Top