تازہ ترین
ذوالفقار علی بھٹو کا 91 واں یوم پیدائش آج منایا جارہا ہے

ذوالفقار علی بھٹو کا 91 واں یوم پیدائش آج منایا جارہا ہے

کراچی:( 05 جنوری 2019) ذوالفقارعلی بھٹو کا 91 واں آج یوم پیدائش منایا جارہا ہے۔ پاکستان کی تاریخ ان کے تذکرے کے بغیرادھوری ہے ۔ ذوالفقاربھٹو کی وراثت میں پاکستان کا آئین اور ملک کو قوت بنانے کی بنیاد شامل ہے۔ بھٹو اپنی شہادت کے بعدایک دیومالائی کردار کی حیثیت اختیار کرگئے ۔ ان کے مخالفین بھی ان ایٹمی کی سیاسی بصیرت کے معترف نظرآتے ہیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

ذوالفقارعلی بھٹو 5 جنوری 1928 کو موہن جو دڑو کے قریب لاڑکانہ میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد سرشاہنواز بھٹو اس زمانے کے بڑے جاگیرداراور بمبئی اور جوناگڑھ ریاستوں میں اہم عہدوں پر فائز رہے۔ذوالفقارعلی بھٹو نے 1950 میں برکلے یونی ورسٹی کیلیفورنیا سے علم سیاست میں گریجویشن کی اور 1952میں آکسفورڈ یونی ورسٹی سے قانون میں ماسٹرز ڈگری حاصل کی۔ کچھ عرصہ انہوں نے کراچی کے مسلم لا کالج میں لیکچرر کے فرائض انجام دیئے اور 1953 میں سندھ ہائی کورٹ میں وکالت شروع کی۔

سیاست ان کا پسندیدہ سبجیکٹ تھا۔ وکالت کوچھوڑااور 50 کے عشرے کے اواخرمیں وہ پہلے اسکندرمرزااور بعدمیں پہلے فوجی حکمران ایوب خان کی کابینہ میں وزیرپیٹرولیم اوروزیرخارجہ رہے۔سنہ  1967 میں انہوں نے پیپلزپارٹی کی بنیاد رکھی۔ تین سال بعد 1977 کے عام انتخابات میں پیپلزپارٹی نے مغربی پاکستان میں نمایاں کامیابی حاصل کرلی۔سقوط ڈھاکہ کے بعد ذوالفقاربھٹو دسمبر 1971 سے 13 اگست 1973 تک ملک کے صدررہے اور 14 اگست 1973 کو ملک کے نئے آئین کے تحت وزیراعظم کے عہدے کا حلف سنبھال لیا۔ 5 جولائی 1977 کو ضیاالحق نے ذوالفقاربھٹو کی حکومت پرقبضہ کرکے ملک پرمارشل لا نافذ کردیااورتمام سیاسی جماعتوں پرپابندی عائد کردی۔ 4 اپریل 1989 کوذوالفقاربھٹو کوایک متنازعہ مقدمے میں سزائے موت دے دی گئی۔

یہ بھی پڑھیے

پاکستان پیپلز پارٹی کا وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا کے استعفیٰ کا مطالبہ

دوست محمد کھوسہ کا پیپلز پارٹی میں شمولیت کا فیصلہ

Comments are closed.

Scroll To Top