تازہ ترین
شاہد خاقان عباسی کی نااہلی سے متعلق کیس کا فیصلہ جاری

شاہد خاقان عباسی کی نااہلی سے متعلق کیس کا فیصلہ جاری

لاہور: (14 ستمبر 2018) ہائیکورٹ کے ایپلٹ ٹربیونل نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی نااہلی سے متعلق کیس کا فیصلہ جاری کردیا۔ عدالت نے ریمارکس دیئے کہ شاہد خاقان عباسی نے اثاثوں کی مالیت درست ظاہر نہیں کی۔ آرٹیکل 62، 63 کے تحت شاہد خاقان عباسی پارلیمنٹ کے ممبر بننے کے اہل نہیں۔

جسٹس عباد الرحمان لودھی پر مشتمل ایپلٹ ٹربیونل نے دس صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ سنایا۔ فیصلے میں کہا گیا کہ آئین کے آرٹیکل 62، 63 پر پورا نہ اترنے والے اقتدار میں آکر عدالتی کارروائی کو منطقی انجام تک نہیں پہنچنے دیتے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اسمبلی کی مدت مکمل ہوجاتی ہے لیکن الیکشن مقدمات کا فیصلہ نہیں آتا۔ الیکشن پٹیشنز کے فیصلے نہ آنے کی وجہ سے ایسے لوگ اسمبلیوں کے مزے لیتے رہتے ہیں۔فیصلے میں کہا گیا کہ شاہد خاقان عباسی نے اثاثوں کی مالیت درست ظاہر نہیں کی۔ شاہد خاقان عباسی نے اسلام آباد کے پوش علاقے میں گھر کی قیمت 3 لاکھ روپے ظاہر کی، جبکہ اسی گھر کی مالیت بینک میں 2 کروڑ 47 لاکھ روپے سے زائد ظاہر کی گئی۔

ایپلٹ ٹربیونل نے اپنے فیصلے میں کہا کہ شاہد خاقان عباسی وزیر اعظم رہ چکے ہیں اور ملک کے وزیراعظم کو عوام کا چہرہ سمجھا جاتا ہے۔ قوم دنیا سے عزت کے حصول کی  خاطر اپنا چہرہ صاف شفاف رکھنا چاہتی ہے۔ اگر زنگ آلود چہرے عوام کی قیادت کریں گے تو عزت کا حصول ممکن نہیں۔ آرٹیکل 62، 63 کے تحت شاہد خاقان عباسی پارلیمنٹ کے ممبر بننے کے اہل نہیں ہیں۔ایپلٹ ٹریبونل نے مس کنڈکٹ پر ریٹرنگ افسر کے خلاف بھی قانون کے تحت کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

شاہد خاقان عباسی کو این اے57 سے الیکشن لڑنے کی اجازت مل گئی

شاہد خاقان عباسی نااہلی کیس: عدالت نے آر او کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top