تازہ ترین
شاہد خاقان عباسی نااہلی کیس: عدالت نے آر او کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا

شاہد خاقان عباسی نااہلی کیس: عدالت نے آر او کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا

لاہور: (04 جولائی 2018) ہائیکورٹ نے این اے 57 سے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی نااہلی کیس میں کل متعلقہ آر او کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیا ہے۔

لاہور ہائیکورٹ میں این اے 57 سے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی نااہلی کے فیصلے کے خلاف اپیل پر سماعت ہوئی۔ سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی عدالت میں پیش ہوئے۔

وکیل شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ایپلٹ ٹربیونل کسی کو تاحیات نااہل نہیں کرسکتی۔ جس پر عدالت نے کہا کہ عباسی صاحب! ہم آپ سے بات کرنا چاہتے ہیں، حکومت کبھی کسی کی تو کبھی کسی اور کی ہوتی ہے۔ عدالتیں قانون کے مطابق چلتی ہیں، جج کی کرسی پر بیٹھنا اتنا آسان نہیں جتنا نظر آتا ہے۔ باتیں کرنا بند کردیں، آپ کی حکومت نہ آئی تو ان ہی عدالتوں میں آنا ہے۔ آپ کسی آسٹریلیا کی عدالت میں پیش نہیں ہوں گے۔لاہور ہائیکورٹ نے ریمارکس دیئے کہ پیپلزپارٹی کے ساتھ جو ہوا آفرین ہے، انہوں نے تو کچھ نہیں کہا۔ آپ کی بھی اتنی ہی عزت ہے جتنی کسی اور کی، ہمارا کوئی ایجنڈا نہیں ہے۔ آپ اپنے ایجنڈے پر کام کریں لیکن عدلیہ کے خلاف بیان دینا بند کر دیں۔

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ آپ کو معلوم نہیں نواز شریف کو جوتا پڑا۔ بلاول کے ساتھ کراچی میں کیا ہوا ؟ خواجہ آصف کے منہ پر سیاہی پھینکنے جیسے کئی واقعات ہوئے۔ نظام کو بہتر کرنے کی کوشش کریں، سابق وزیراعظم ہیں، سسٹم کو بچانے کی کوشش کریں۔ اگرچہ یہ معاملہ متعلقہ نہیں لیکن یہ باتیں کرنا ضروری ہے۔عدالت نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے استفسار کیا کہ نواز شریف کی نااہلی پر آپ نے کہا کہ میرے وزیراعظم ہیں، کیا آپ کو ایسا کہنا چاہیے تھا۔

لاہور ہائیکورٹ نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی نااہلی کیس میں متعلقہ آر او کو ریکارڈ سمیت کل طلب کرلیا ہے۔

اس سے قبل 29 جون کو لاہور ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان کی تاحیات نا اہلی کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے انہیں این اے 57 مری سے الیکشن لڑنے کی اجازت دی۔

شاہد خاقان عباسی نے آبائی حلقے این اے 57 مری سے کاغذات نامزدگی مسترد کیے جانے کے فیصلے کے خلاف خواجہ طارق رحیم کے توسط سے لاہور ہائیکورٹ میں 28 جون کو اپیل کی تھی۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

سابق وزیراعظم نے اپیل میں مؤقف اختیار کیا تھا کہ ایپلٹ ٹریبونل نے اختیارات سے تجاوز کیا، ٹریبونل کو تاحیات نااہلی کا کوئی اختیار نہیں ہے۔ساتھ ہی انہوں نے ایپلٹ ٹریبونل کے فیصلے کو کالعدم قرار دینے کی بھی استدعا کی تھی۔

لاہور ہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ نے ابتدائی حکم میں شاہد خاقان عباسی کے کاغذات مسترد کرنے کا ایپلٹ ٹریبونل کا فیصلہ معطل کرتے ہوئے انہیں انتخاب لڑنے کی اجازت دی۔ذرائع کے مطابق شاہد خاقان عباسی نے عدالت کا فیصلہ سن کر قہقہ لگایا اور اپنی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مجھے عدالت کا ہر فیصلہ منظور ہے۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے کارکن مسعود احمد عباسی نے شاہد خاقان عباسی کے این اے 57 مری سے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے خلاف ایپلٹ ٹریبونل میں درخواست دائر کی تھی۔

جسٹس عباد الرحمان لودھی پر مشتمل ٹریبونل نے سماعت مکمل ہونے کے بعد 27 جون کو محفوظ کردہ فیصلہ سناتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کے آبائی حلقے سے کاغذات نامزدگی مسترد کرتے ہوئے انہیں اس حلقے سے الیکشن کے لیے تاحیات نااہل قرار دے دیا تھا۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

واضح رہے کہ اس سے دو روز قبل اپیلٹ ٹریبونل نے این اے ستاون مری سے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی جبکہ این اے سڑسٹھ سے پی ٹی آئی رہنما فواد چوہدری کو عام انتخابات کے لئے نا اہل قرار دے دیا تھا، لاہور ہائی کورٹ نے گذشتہ روز پی ٹی آئی ترجمان کی درخواست منظور کرتے ہوئے انہیں الیکشن لڑنے کی اجازت دےدی تھی۔دوسری جانب عام انتخابات کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرانے والے امیدواروں کے الیکشن سے دستبردار ہونے کا آج آخری روز ہے،انتخابی شیڈول کے مطابق الیکشن کمیشن کی جانب سے امیدواروں کی حتمی فہرست آج شائع کی جائے گی۔

اس سے قبل الیکشن کمیشن نے تمام امیدواروں کو یاددہانی کرائی کہ امیدواروں کیلئے پارٹی وابستگی کا سرٹیفکیٹ متعلقہ ریٹرننگ افسران کو جمع کرانے کی آج آخری تاریخ ہے،کمیشن نے واضح کیا ہے کہ وہ امیدوار جو پارٹی وابستگی کاسرٹیفکیٹ جمع نہیں کراسکیں گے انہیں پارٹی کے نشانات الاٹ نہیں کئے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیے

شاہد خاقان عباسی کو این اے 57 مری سے الیکشن لڑنے کی اجازت

نواز شریف اور شاہد خاقان کیخلاف بغاوت کی کارروائی کیلئے درخواست دائر

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top