تازہ ترین
سیپرا کرپشن اسکینڈل: شدید دباؤ کے باوجود سنسنی خیز رپورٹ تیار

سیپرا کرپشن اسکینڈل: شدید دباؤ کے باوجود سنسنی خیز رپورٹ تیار

کراچی (13 مارچ 2018) سیپرا کرپشن اسکینڈل کے معاملے پر اینٹی کرپشن نے شدید دباؤ کے باوجود سنسنی خیز رپورٹ تیار کرلی۔ اینٹی کرپشن نے کروڑوں روپے کے ٹھیکوں کی آئی ڈیز چھپانے کی تصدیق کردی۔

اینٹی کرپشن نے شدید دباؤ کے باوجود سنسنی خیز رپورٹ تیار کرلی۔ کروڑوں روپے کے ٹھیکوں کی آئی ڈیز چھپانے کی تصدیق کردی گئی۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبایے

آئی ڈیز چھپانے میں 3 ایم ڈیز، 2 ڈائریکٹرز، 2 ڈپٹی ڈائریکٹرز، نو اسسٹنٹ ڈائریکٹرز اور آئی ٹی انچارج کو ذمہ دار قرار دے دیا۔ تحقیقات میں 2 سابق ایم ڈیز اور خالد چاچڑ کو بھی ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔

آئی ڈیز چھپا کر کروڑ پتی بننے والوں میں ڈپٹی ڈائریکٹر ایوب علی خان اور عمران رزاق بھی ملوث قرار دئے گئے ہیں۔ اسسٹنٹ ڈائریکٹرز اشفاق میمن، صنوبر گل انڑ، قمر زمان شاہ، انور ملک اور مرتضی میمن بھی ملوث قرار پائے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر وحدت لاکھو، پنجل خان، اعجاز لغاری اور آئی ٹی انچارج عمران کاشف عرف عمران اخلاق بھی ملوث قرار دے دیے گئے ہیں۔

سیپرا کے سابق ڈائریکٹر زبیر پرویز اور جاوید مہر کو بھی ملوث قرار دے کر رپورٹ منظوری کے لیے چیئرمین کو بھیج دی گئی ہے۔

آئی ڈیز چھپانے کی تحقیقات میں بڑی بڑی رکاوٹیں ڈالی گئیں۔ سابق ڈپٹی ڈائریکٹر غضنفر قادری مبینہ طور 50 لاکھ لے کر کیس ادھورا چھوڑ کر چلے گئے۔

انکوائری میں صرف 2016 میں اربوں رپے کے 826 ٹھیکوں کی آئی ڈیز چھپا کر بی ای آر رپورٹ بھی نہیں لگائی گئیں۔ رپورٹ 2012 سے لے کر 2017 تک آئی ڈیز چھپا کر اربوں رپے کمائے گئے۔

یہ بھی پڑھیے

سیپرا میں آئی ڈیز چھپانے کا سلسلہ نہ تھم سکا

کراچی: اینٹی کرپشن کا سیپرا کے دفتر پر دوبارہ چھاپہ، مزید ریکارڈ ضبط

Comments are closed.

Scroll To Top