تازہ ترین
سینیٹ کی ملک میں آبی قلت پر واپڈا اور ارسا پر شدید تنقید

سینیٹ کی ملک میں آبی قلت پر واپڈا اور ارسا پر شدید تنقید

اسلام آباد: (24 ستمبر 2018) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی آبی وسائل نے ملک میں آبی قلت پر واپڈا اور ارسا پر شدید تنقید کی ہے۔ چیئرمین واپڈا لیفٹیننٹ جنرل ریٹائرڈ مزمل حسین نے کہا ہے کہ ملک میں آبی ذخائرکی تعمیر میں سست روی کی قصوروار حکومتیں اور افسر شاہی ہیں۔ ڈیموں کی تیز رفتارتعمیر کیلئے واپڈا کو خودمختاری دی جائے۔  

سینیٹرشمیم آفریدی کی زیرصدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی آبی وسائل کا اجلاس ہوا۔ رکن کمیٹی سینیٹر مظفر حسین شاہ نے کہا کہ سندھ کو فصل خریف میں بہت کم پانی ملا۔

سینیٹر عثمان کاکڑ نے کہا کہ بلوچستان کو پانی کا حصہ نہیں دیا جارہا۔ سینیٹر جہانزیب جمالدینی نے کہا کہ پٹ فیڈر اور کیرتھر نہروں میں پانی دستیاب نہیں، لوگ سندھ سے پانی لا کر گزار کررہے ہیں۔چیئرمین واپڈا مزمل حسین نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ملک میں پانی بحران کے ذمہ دار واپڈا اور ارسا نہیں، موجودہ سسٹم فرسودہ ہوچکا ہے۔ پانی کی چوری بہت زیادہ ہے، ملک میں ڈیم اس وقت بنے جب واپڈا خود مختارتھا۔ واپڈا اور ارسا کے ہاتھ بندھے ہوئے ہیں، ہم پرالزام تراشی نہ کی جائے۔

چیئرمین واپڈا نے مزید کہا کہ کمیٹی واپڈا کو بیوروکریسی کی بجائے، براہ راست وزیراعظم کے ماتحت کرنے کی سفارش کرے۔

جس پر کمیٹی نے متفقہ طور پر واپڈا ارسا اور دیگر متعلقہ اداروں کو وزیراعظم کے ماتحت کرنے کی سفارش کردی۔

یہ بھی پڑھیے

الیکٹرانک جرائم کی روک تھام کا ترمیمی بل 2018ء سینیٹ میں پیش

سینیٹ میں مالیاتی ترمیمی بل 2018ء پیش کردیا گیا

 

Comments are closed.

Scroll To Top