تازہ ترین
سینکڑوں جنگلی جانوروں کی محفوظ پناہ گاہ

سینکڑوں جنگلی جانوروں کی محفوظ پناہ گاہ

ویب ڈیسک(16 فروری 2018) ڈاکٹر پرکاش امیت اور ان کی بیوی ڈاکٹر منداکنی امیت نے زندگی گزارنے کا ایک کا غیر معمولی طریقہ اپنایا ہے انہوں نے اپنے صحن میں ایک جنگلی جانوروں کے لئے پناہ گاہ بنائی ہے۔

اس جوڑے نے اپنا بہت سا وقت مہاراشٹرا، ہیمکلسا میں قبائلی اور مقامی لوگوں کی خدمات کے ساتھ اپنےگھر کو ایک چڑیا گھرمیں تبدیل کرنے صرف کیا ہے۔

اس جوڑے کے مطابق ستر کی دہائی میں ایک بار ڈاکٹر پرکاش اپنی بیوی کے ساتھ جنگل سے گزر رہے تھے کہ انھوں نے دیکھا کہ ایک قبائلی گروہ ایک مردہ بندر کے ساتھ شکار سے واپس آرہا ہے اس گروہ کے قریب جا کے معلوم ہوا کہ ایک چھوٹا بندر کا بچہ زندہ ہے اور اپنے مردہ والدین کے گرد گھومتے ہوئے آوازیں نکال رہا ہے۔

ڈاکٹر پرکاش نے قبائلی سے پوچھا، مردہ بندر کے ساتھ کیا کریں گے؟ تو انھوں نےجواب دیا کہ اس شکار کا مقصد تفریح​​نہیں بللکہ کمیونٹی کے لئے کھانے کا انتظام کرنا ہے اوریہ قبائلی اسی طرح سےشکار کر کے اپنا پیٹ بھرتے ہیں ۔

اس موقع پرڈاکٹر پرکاش نے قبائلیوں سے درخواست کی کہ وہ یہ بندر کا بچہ انہیں دیں اور بدلے میں چاول اور کپڑے لے لیں۔ ان قبائلیوں نے ان کی بات پر اتفاق کیا۔ اس دن سے وہ بندر کا بچہ اس ڈاکٹر جوڑے کے گھر پہنچ گیا اور اسی گھر کا ایک فرد بن گیا۔

:یہ بھی پڑھیے

دادو میں ’’مرشد دی بلی’’ کا مزار بنادیا گیا

دادو میں ’’مرشد دی بلی’’ کا مزار بنادیا گیا

Comments are closed.

Scroll To Top