تازہ ترین
سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں بھارت فوج کی فائرنگ،3 کشمیری شہید

سرینگر:مقبوضہ کشمیر میں بھارت فوج کی فائرنگ،3 کشمیری شہید

سرینگر : (12 مارچ 2018) مقبوضہ کشمیر میں بھارت فوج نے فائرنگ کرکے تین کشمیریوں کو شہید کردیا۔ کشمیریوں کی نسل کشی کے خلاف وادی میں ہڑتال ۔قابض فوج نے مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ کرکے میرواعظ عمر فاروق کو نظربند اور یاسین ملک و دیگر کوگرفتار کرلیا۔ اقوام متحدہ نے مقبوضہ وادی کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیاہے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کے مظالم بڑھتے جا رہے ہیں۔ قابض فوج نے ضلع اسلام آباد کے علاقے ہکورا میں گھر گھر تلاشی کے دوران تین کشمیریوں کو فائرنگ کرکے شہید کردیا۔ کشمیری نوجوانوں عیسیٰ فاضلی، اویس شفی اور سبزر احمد صوفی کا قصور چادر اور چار دیواری کے تقدس کی پامالی کی مزاحمت کرنا تھا۔ کشمیریوں کی نسل کشی کے خلاف اسلام آباد، شوپیان اور دیگر اضلاع میں کاروبار بند ہوگیا۔ہزاروں افراد نے جنازوں میں شرکت کی۔

 

قابض فوج نے جنازے سے واپس آنے والوں پر فائرنگ، شیلنگ اور لاٹھی چارج کرکے دو سو زائد کشمیریوں کو زخمی کردیاجبکہ متعدد کوگرفتار کر لیا۔نظر بندی توڑ کر گھر سے نکلنے والے حریت کانفرنس کے چیئرمین میراعظ عم فاروق کو گرفتار کرکے واپس گھر میں نظربند کردیا جبکہ یاسین ملک، وازا اوردیگر حریت رہنماؤں کو جیل بھیج دیا۔

انسانی حقوق سے متعلق اقوام متحدہ کی کونسل کے ڈائریکٹر زید ریاض الحسین نے نمائندوں اور سول سوسائٹی سے ملاقات میں کشمیر کی صورتحال پر تشویش کا اظہار کیا۔ملاقات میں شریک کشمیری نمائندے سید فیض نقشبندی نے مطالبہ کیا کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق اقوام متحدہ کا ایلچی مقرر کیا جائے۔

یہ بھی پڑھیے

سرینگر:کشمیریوں کی نسل کشی کےخلاف مقبوضہ کشمیرمیں مکمل ہڑتال

مقبوضہ کشمیر:نوجوانوں کے قتل عام کیخلاف وادی میں ہڑتال دوسرے روز بھی جاری

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top