تازہ ترین
سانحہ تربت:  2 افراد کی میتیں سیالکوٹ میں سپردخاک

سانحہ تربت: 2 افراد کی میتیں سیالکوٹ میں سپردخاک

سیالکوٹ: (17 نومبر 2017) سانحہ تربت میں دہشتگردی کا نشانہ بننے والے مزید 2 افراد کی میتیں سیالکوٹ میں ان کے گھر پہنچادی گئیں ہیں۔ دونوں مقتولین کو مقامی قبرستان میں سپردخاک کردیا گیا ہے۔

سانحہ تربت میں دہشتگردی کا نشانہ بننے والے مزید 2 افراد کی میتیں سیالکوٹ کے علاقے سمبڑیال میں ان کے گھروں میں پہنچادی گئی ہیں۔ مقتولین میں 18 سالہ علی رضا اور 17 سالہ ماجد شامل ہیں جو گاؤں جیٹھیکے کے رہائشی تھے۔

دونوں مقتولین کو مقامی قبرستان میں سپرد خاک کردیا گیا ہے، جبکہ گزشتہ روز تربت میں قتل ہونے والے چار افراد کو سیالکوٹ میں سپردخاک کیا گیا ہے۔

واضح رہے دو روز قبل بلوچستان کے علاقے تربت سے 15 افراد کی تشدد زدہ لاشیں برآمد ہوئی تھیں۔ کمشنر مکران بشیر احمد کے مطابق یہ افراد غیر قانونی طور پر باہر جانے کی کوشش کر رہے تھے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

نامعلوم مسلح افراد نے بلوچستان کے ضلع کیچ کے علاقے گروک میں انہیں گاڑی سے اتار کر فائرنگ کر کے قتل کیا۔ جاں بحق ہونے والے تمام افراد نوجوان اور پنجابی تھے۔

ادھر آج ایف سی نے خفیہ آپریشن کے دوران تربت میں 15 افراد کے قتل میں ملوث دہشتگرد کو ہلاک کردیا ہے۔ آئی ایس پی آر کے مطابق ایف سی بلوچستان نے تربت کے گاؤں عبدالرحمان میں خفیہ اطلاعات پر آپریشن کیا تو محاصرے کے دوران دہشت گردوں نے فورسز پر فائرنگ کردی جس کے بعد فورسز کی جوابی فائرنگ کے نتیجے میں ایک دہشت گرد یونس توکلی مارا گیا۔ ہلاک دہشتگرد تربت میں 15 افراد کے قتل میں ملوث تھا۔

دوسری جانب ایف آئی اے نے گجرات میں کامیاب کارروائی کرتے ہوئے تربت میں جاں بحق ہونے والے ذوالفقار کو زمینی راستے سے ترکی بھیجنے والے ایجنٹ کو گرفتار کرلیا ہے۔ جبکہ سانحہ تربت پر ایف آئی اے نے ابتدائی رپورٹ وزارت داخلہ کو ارسال کردی ہے۔
یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

واضح رہے کہ بلوچستان میں اس سے پہلے بھی تشدد زدہ لاشیں برآمد ہوتی رہی ہیں۔ بلوچستان میں 2008 میں تشدد زدہ لاشوں کی برآمدگی کا سلسلہ شروع ہوا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

تربت میں 15 افراد کے قتل میں ملوث دہشتگرد مارا گیا

تربت میں جاں بحق ہونے والے شخص کو ترکی بھیجنے والا ایجنٹ گرفتار

 

Comments are closed.

Scroll To Top