تازہ ترین
زندہ کتابیں،اردوادب کی نئی تحریک

زندہ کتابیں،اردوادب کی نئی تحریک

انیس سوپچھہتر میں مرحوم سیدقاسم محمود نے اردوادب اورذوق مطالعہ کے فروغ کے سستی کتب کی اشاعت کابیڑہ اٹھایا۔ اور’’شاہکار‘‘ بکس کا عظیم منصوبہ شروع کیا۔شاہکارکے تحت دوسے پانچ روپئے کی معمولی قیمت میں دنیاکے بہترین کتابوں کوجریدی انداز میں شائع کیاگیا۔ اس منصوبے کے تحت اردو اورعالمی ادب کے بہترین کتابیں جریدی،پاکٹ بکس،منی بکس اوراخبارکی شکل میں شائع کی گئیں۔جن میں ابوالحسن اصفہانی کی قائداعظم محمدعلی جناح کی سوانح حیات،ابن انشاکے سفرنامے،مختارمسعود کی کلاسک آوازدوست،لواسٹوری، اولیو راسٹوری، مجبورآوازیں، تاریخ عالم اوردیگربے شمارکتابیں شامل ہیں۔ یہی نہیں شاہکارکے زیراہتمام مختلف موضوعات پرجریدے انداز میں قسط وارانسائیکلوپیڈیاز بھی شائع کئے گئے۔

جن میں اسلامی انسائیکلوپیڈیا،انسائیکلوپیڈیا پاکستانیکا،فلکیات،ایجادات اورکئی اورانسائیکلوپیڈیازسے اردو زبان کومالامال کیا۔ شاہکار کی مقبولیت کے بعدملک کے نامورپبلشرزشیخ شوکت علی اورنیاادارہ نے بھی جریدی کتب شائع کرنا شروع کیں۔ شیخ شوکت علی اینڈ سنز نے اے حمید کا تحریرکردہ اردوادب کا لازوال سلسلہ ’’اردوشعرکی داستان‘‘ اور’’اردو نثر کی داستان‘‘ قسط وار شائع کیں۔ اس طرح قارئین کوکم قیمت میں عمدہ ادب پڑھنے کا موقع ملا۔اب تقریباً دودہائیوں کے بعد محترم راشد اشرف نے ’’زندہ کتابیں‘‘ کے زیرعنوان اردو کے نایاب اورشاہکارکتابوں کی ازسرنواشاعت کا بیڑہ اٹھایاہے۔زندہ کتابوں میں اردو ادب کی لازوال اورطویل مدت سے اشاعت سے محروم کتابوں کوپیپربیک انداز میں شائع کیا جارہا ہے۔راشد اشرف صاحب نے بہت مشکل اوربروقت کام شروع کیاہے۔ اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ انہیں اپنے مقصد کے کامیابی عطاہوں۔
اس کتابی سلسلہ میں اب تک دس کتب منصہ شہود پر آچکی ہیں۔اورکئی عمدہ اورنایاب کتابیں اشاعت کی منتظرہیں۔Image result for Qasim Mehmood 1975زندہ کتابیں کی پہلی کتاب’’ بزم داغ‘‘ شائع کی گئی۔ مولانااحسن مارہروی اورافتخارمارہروی کا تحریر کردہ یہ انتہائی دلچسپ روزنامچہ کم وبیش سترسال سے نایاب تھا۔ جس میں اردوکے بے مثل شاعر داغ دہلوی کی یادداشتیں شامل ہیں۔ یہ نایاب کتاب اردوکے سنجیدہ قاری کے لئے ایک بے مثال تحفے سے کم نہیں۔کتابی سلسلہ کی دوسری اورتیسری جلد مشترک اشاعت پذیرہوئی۔ جس میں اردوکے معروف اورگمشدہ نثرنگار اوربراڈ کاسٹرآغامحمد اشرف کی دوکتابیں ’’لندن سے آداب عرض‘‘ اور’’دیس سے باہر‘‘ شائع کی گئی۔یہ وہی آغا محمداشرف ہیں۔ جن کی آپ بیتی’’ایک دل ہزارداستان‘‘ بہت مشہورہوئی۔جس میں ایک پورا دور چلتا پھرتا نظرآتاہے۔ یہ دونوں کتابیں بھی نصف صدی سے نایاب تھیں۔راشداشرف صاحب نے بھارت کے مشہورمسلمان موسیقارنوشاد کی انتہائی دلچسپ اوربہترین آپ بیتی بھی شائع کی۔ یہ آپ بیتی بھارت کے مشہورترین فلمی اورادبی رسالے شمع دہلی میں قسط وار شائع ہوچکی تھی۔اورغالباً پہلی بارکتابیں صورت میں قارئین کے ہاتھوں میں پہنچی ۔ موسیقاراعظم کی خوبصورت آپ بیتی سے بھارتی فلمی دنیا کے کئی پوشیدہ گوشے عیاں ہوئے۔فلموں سے دلچسپی نہ رکھنے والے قارئین بھی ایک بارکتاب شروع کرکے ختم کئے بغیراسے نہیں چھوڑسکتے۔Image result for Book Fair
مقبول جہانگیرہمارے انتہائی مشہوراورانتھک صحافی تھے۔جنہوں نے گوناگوں موضوعات پربے شمارکتب لکھیں، ان گنت تراجم کئے۔ شکاریات، پراسرار،خوفناک، جاسوسی،ادبی شائد ہی کوئی موضوع ہو۔جس پرمقبول جہانگیرکی تحریر موجود نہ ہو۔ ’’یاران نجد‘‘ مقبول جہانگیر کا نایاب خاکوں کا مجموعہ ہے۔جس میں انہوں نے اپنی دوستوں اوراپنے دورکی کئی شخصیات کے نثری مرقع پیش کئے ہیں۔ زندہ کتابیں میں یاران نجدجیسی یادگارکتاب شائع کرکے ایک منفرد ادیب کوعمدہ خراج عقیدت پیش کیاگیاہے۔Image result for book fair in karachi 2017معروف کالم نگارنصراللہ خان سے اردو کاکونسا قاری واقف نہیں ہے۔اس دورمیں جب ٹی وی چینل موجود نہیں تھے۔اخبار ہی خبرکا واحد ذریعہ ہوتے تھے۔اورکسی روزنامے میں زیادہ کالم شائع نہیں کئے جاتے تھے۔اس دور میں جن کالم نگاروں نے شہرت حاصل کی۔ان میں چراغ حسن حسرت، عبدالمجید سالک،ابراہیم جلیس،مجید لاہوری، انعام درانی اورنصراللہ خان شامل ہیں۔نصراللہ خان کاشخصی خاکوں کا مجموعہ ’’کیاقافلہ جاتاہے‘‘کے نام سے شائع ہواتھا۔یہ کتاب بھی طویل مدت سے نایاب تھی۔اورصاحب ذوق قاری اس کی جستجو میں تھے۔ کیاقافلہ جاتاہے کوشائع کرکے راشداشرف نے ادب کی بڑی خدمت کی ہے۔نصراللہ خان کی غیرمطبوعہ آپ بیتی’’اک شخص مجھی ساتھا‘‘ بھی زندہ کتابیں آئندہ اشاعتی پروگرام میں شامل ہے۔جس کا ادب کے متوالوں کوبے چینی سے انتظار ہے۔Image result for book fair in karachi 2017
’’بھوپت ڈاکوکی سوانح عمری‘‘ بھی شائع ہوچکی ہے۔اردوکے صاحب طرزادیب ملاواحدی کے بارے میں ان کے معاصرین کی رائے پر مبنی کتاب’’ملاواحدی معاصرین کی نظرمیں‘‘ ایک اورعمدہ کتاب ہے۔جوقارئین کی نذرکی گئی۔اردو کے منفرد جاسوسی ناول نگارابن صفی کے بارے میں کتاب’’ابن صفی کہتی ہے تجھ کوخلق خداغائبانہ کیا‘‘ بھی مصنف کے پرستاروں کیلئے ایک عمدہ تحفہ ہے۔
ادارے کے مستقبل کے پروگرام میں بھارتی ادیب رام لعل کی آپ بیتی’’ کوچہ قاتل‘‘ اوراخلاق احمددہلوی کی خود نوشت’’ یادوں کاسفر‘‘ بھی شامل ہیں۔

Related image
ادب دوستوں کی خواہش ہے کہ راشداشرف زندہ کتابوں کا یہ اشاعتی سلسلہ جاری رکھنے میں کامیاب ہوں اورمزید نایاب کتابیں اشاعت پذیرہوتی رہیں۔ لیکن اس کے لئے کتاب دوستوں کا تعاون لازمی ہے۔ حال ہی میں صاحب طرزادیب ،صحافی اوردانشورچراغ حسن حسرت کی شخصیت اورتصانیف پرمبنی کتاب شائع ہوئی۔تشویشناک بات یہ ہے کہ چراغ حسن حسرت جیسے ادیب کے بارے میں کتاب صرف سوکی تعداد میں شائع ہوئی ہے۔اردوکتب ہزار،پانچ سو اورتین سوکی تعداد سے گھٹ کرسوتک پہنچ جانالمحہ فکریہ ہے۔اس صورت میں راشد اشرف جیسے ادب کے خدمت گارکس طرح کتابوں کی اشاعت کا سلسلہ جاری رکھ سکیں گے۔

اجمل کمال اوران کاادبی جریدہ آج

 

عمراکمل پاکستان کرکٹ کابگڑا بچہ

Comments are closed.

Scroll To Top