تازہ ترین
خوراک کا عالمی دن

خوراک کا عالمی دن

ویب ڈیسک:(16 اکتوبر 2018) پاکستان سمیت دنیا بھر میں آج خوراک کا عالمی دن منایا جا رہا ہے۔ اس دن کو منانے کا مقصد ضرورت سے زائد میسر خوراک کے حامل افراد کو اس بات کا احساس دلانا ہے کہ وہ طبقاتی فرق کو مٹاتے ہوئے دوسروں کا بھی خیال رکھیں۔پاکستان بھوک کا شکار ممالک میں چودہویں نمبر پر آ گیا ہے۔خوراک کا عالمی دن منانے کا آغاز انیس سو اناسی میں ہوا۔ جس کا بنیادی مقصد عالمی سطح پر خوراک کی پیداوار میں اضافہ کرنا ہے۔ گلوبل ہنگر انڈیکس کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں اسی کروڑ سے زائد افراد دو وقت کی روٹی سے محروم ہیں جبکہ بائیس ممالک ایسے ہیں جو شدید غذائی بحران کا چکار ہیں۔ جس میں سے سولہ ممالک میں قدرتی آفات کی وجہ سے غذائی بحران بڑھا۔ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں ایک ارب سے زائد افراد خوراک کی کمی کا شکار ہیں۔ بھوک کی شرح سب سے زیادہ ایشیائی ممالک میں ہے، بھوک کا شکار ممالک میں پاکستان کا نمبر رواں برس چودہواں ہے اور اکیس کروڑ آبادی میں سے پانچ کروڑ سے زائد افراد ایسے ہیں، جنہیں پیٹ بھرکر روٹی میسر نہیں۔

پاکستان میں کل آبادی کابائیس فیصد حصہ غذا کی کمی کا شکار ہے جبکہ آٹھ عشاریہ ایک فیصد بچے پانچ سال سے کم عمری میں ہی وفات پا جاتے ہیں۔اقوام متحدہ کے ادارہ برائے خوراک و زراعت کے مطابق اگر کھانے کو ضائع ہونے سے بچایا جائے، اور کم وسائل میں زیادہ زراعت کی جائے تو دو ہزار تیس تک اس ہدف کی تکمیل کی جاسکتی ہے۔

پاکستان میں خوراک کی کمی کی ایک بڑی وجہ آبادی میں تیزی سے اضافہ ہے اوریہ بات درست ہے کہ پاکستان دنیا کے ان ممالک میں شامل ہے جہاں آبادی میں بے انتہا اور تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

دیہی خواتین کا عالمی دن

عالمی یوم بصارت

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top