تازہ ترین
ترکی نے سعودی صحافی کے قتل سے متعلق آڈیو اور ویڈیو شواہد حاصل کرلیے

ترکی نے سعودی صحافی کے قتل سے متعلق آڈیو اور ویڈیو شواہد حاصل کرلیے

استنبول:(12 اکتوبر 2018) ترک حکام نے چند روز قبل لاپتہ ہونے والے صحافی جمال خشگوی کے سعودی قونصل خانے میں قتل سے متعلق صوتی اور بصری شواہد حاصل کر لیے ہیں۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق ترکی کے اعلیٰ تفتیشی حکام نے استنبول کے سعودی قونصل خانے میں شاہ سلمان کے سخت ناقد جلا وطن صحافی جمال خوشگوی کے قتل ہونے کے آڈیو اور ویڈیو شواہد حاصل کرلیے ہیں۔

 بشکریہ: بی بی سی

رپورٹ کے مطابق یہ تفصیلات ایسے شخص نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتائی ہیں جو خود بھی لاپتہ صحافی کے معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں اور انہیں ترکی کے اعلیٰ تفتیشی حکام کی جانب سے بریفنگ دی گئی تھی۔ بریفنگ کے دوران وہ صحافی کے قتل کی آڈیو اور ویڈیو شواہد دیکھ کر دنگ رہ گئے۔

یاد رہے کہ سعودی نژاد جمال خوشگوی سعودی حکمراں کے سخت ناقد سمجھے جاتے ہیں اور شاہی خاندان پر مسلسل تنقید کے باعث انہیں جلا وطن بھی ہونا پڑا تھا۔

جمال خوشگوی واشنگٹن پوسٹ میں باقاعدگی سے کالم لکھتے رہے ہیں اور کچھ ضروری دستاویزات کے حصول کے لیے استنبول میں واقع سعودی قونصل خانے گئے تھے۔سعودی صحافی کے لاپتہ ہوجانے پر واشنگٹن پوسٹ نے احتجاجاً اُن کا کالم خالی چھوڑ دیا تھا تاکہ دنیا کو اس معاملے کی حساسیت اور سنگینی کا اندازہ ہو۔

ترک حکام نے ابتدائی تحقیقات کے بعد ہی صحافی کے قونصل خانے میں قتل ہوجانے کا خدشہ ظاہر کیا تھا۔

گزشتہ روز ترک صدر رجب طیب اردوان نے کہا تھا کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی کی گمشدگی کےمعاملے پرخاموش رہنا ممکن نہیں، یہ کوئی عام معاملہ نہیں ہے۔

ترک میڈیا کے مطابق ترکی کے صدررجب طیب اردوان نے ہنگری سے واپسی پر طیارے میں صحافیوں سے سعودی صحافی کی گمشدگی کے معاملے پر گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ معاملے کے ہر پہلو کی تحقیقات کر رہے ہیں۔انہوں نے سعودی قونصلیٹ کے صحافی کی واپسی کی فوٹیج نہ ہونے کے بیان پر جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ کیا ایسا ممکن ہے کہ سعودی قونصلیٹ کے باہر کوئی کیمرہ سسٹم نہ ہو۔

واضح رہے کہ سعودی صحافی جمال خاشقجی دو اکتوبرکو ترکی میں واقع سعودی قونصلیٹ میں داخل ہونے کے بعد سے لاپتہ ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

سعودی صحافی کی گمشدگی:ترکی، سعودی عرب کی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل

بلغاریہ کی خاتون صحافی وکٹوریا مارینووا کا قاتل جرمنی سے گرفتار

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top