تازہ ترین
بے نظیر بھٹو کی زندگی اور سیاسی جدوجہد کی تصویری جھلکیاں

بے نظیر بھٹو کی زندگی اور سیاسی جدوجہد کی تصویری جھلکیاں

ویب ڈیسک:(27 دسمبر 2018) سابق وزیراعظم پاکستان اور پاکستان پیپلز پارٹی کی شہید چیئرپرسن محترمہ بے نظیر بھٹو کی 11 ویں برسی آج منائی جارہی ہے۔ بے ںطیر بھٹو دو مرتبہ پاکستان کی وزیراعظم منتخب ہوئیں۔ انہیں مسلم دنیا کی پہلی خاتون وزیراعظم بننے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔

بے نظیر بھٹو 21 جون انیس سو تریپن میں پیدا ہوئیں۔ محترمہ بے نظیر ذوالفقار علی بھٹوبیگم نصرت بھٹو کی سب سے بڑی بیٹی تھیں۔ان کے والد ذوالفقار علی بھٹو پاکستان پیپلز پارٹی کے بانی ہونے کے ساتھ ساتھ انیس سو ستر کی دہائی میں پاکستان کے وزیر اعظم اور صدر بھی رہے۔ انیس سو انہتر میں انہیں پھانسی دے دی گئی۔ بے نظیر بھٹو نے ہارورڈ یونیورسٹی اور آکسفورڈ یونیورسٹی سے تعلیم حاصل کی۔انیس سو چوراسی میں بے نظیر کو جیل سے رہائی ملی، جس کے بعد انہوں نے برطانیہ میں جلا وطنی کی زندگی گزاری۔ انیس سو اٹھاسی میں ملک میں عام انتخابات کا انعقاد ہوا جس میں پاکستان پیپلز پارٹی نے واضح کامیابی حاصل کی اور دسمبر انیس سو اٹھاسی میں بے نظیر بھٹو نے وزیراعظم کے عہدے کا حلف اٹھایا۔بے نظیر بھٹو سترہ فروری انیس سو ستاسی میں نواب شاہ کی اہم شخصیت حاکم علی زرداری کے بیٹے آصف علی زرداری سے روشتہ ازدواج میں منسلک ہو گئیں۔محترمہ بے نظیر بھٹو کی حکومت کو سات اگست انیس سو نوے کو صدر اسحاق خان نے بدعنوانی اور کرپشن کی وجہ سے برطرف کر دیا۔ جس کے بعد انیس سو ترانوے کے عام انتخابات میں ایک بار پھر پیپلز پارٹی اور اس کے حلیف جماعتیں معمولی اکثریت سے کامیاب ہوئیں اور بے نظیر ایک مرتبہ پھر وزیرِاعظم بن گئیں۔ انیس سو چھیانوے میں پیپلز پارٹی کے ہی صدر فاروق احمد خان لغاری نے بے امنی اور بد عنوانی، کرپشن کے باعث بے نظیر کی حکومت کو برطرف کر دیا۔انیس سو اٹھانوے میں بے نظیر نے جلا وطنی کے بعد دبئی میں مسقتل سکونت اختیار کی۔محترمی بے نظیر بھٹو کے تین بچے ہیں جن میں بلاول بھٹو زرداری، بختاور بھتو زرداری اور آصفہ بھٹو زرداری شامل ہیں۔Image result for Benazir with her three childrenانیس اکتوبر دو ہزار سات میں بے نظیر بھٹو کراچی واپس آئیں جہاں ان کے قافلے پر حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں درجنوں افراد ہلاک ہو گئے تاہم حملے میں بے نظیر بھٹو محفوظ رہیں۔بے نظیر بھٹو ستائیس دسمبر دو ہزار سات میں راولپنڈی کے لیاقت باغ میں قاتلانہ حملے میں شہید ہو گئیں۔پاکستان کی سیاست بےنظیر کے بغیر ادھوری ہے اور میثاق جمہوریت ان کے سیاسی کیریئر میں اہم سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے۔بے نظیر بھٹو کو گڑھی خدا بخش لاڑکانہ میں ان کے والد ذوالفقار علی بھٹو اور اور بھائی کے قریب سپرد خاک کیا گیا۔

یہ بھی پڑھیے

قائد اعظم محمد علی جناح تصویر کے آیئنے میں

بیگم کلثوم نواز کی زندگی کا تصویری جائزہ

Comments are closed.

Scroll To Top