تازہ ترین
بھارت میں گائے اسمگلنگ کے الزام میں ایک اور مسلمان کو قتل کر دیا گیا

بھارت میں گائے اسمگلنگ کے الزام میں ایک اور مسلمان کو قتل کر دیا گیا

راجھستان:(21 جولائی 2018) بھارت میں انتہا پسندی کا ایک اور واقعہ پیش آیا ہے۔ جہاں راجھستان میں جنونی ہندوؤں نے گائے اسمگلنگ کے الزام میں ایک اور مسلمان کو قتل کر دیا ہے۔

بھارتی ریاست راجھستان میں جنونی ہندوؤں کے ہجوم نے دو مسلمان نوجوانوں کو گائے کی خرید و فرخت کا الزام لگا کر بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں ایک نوجوان جاں بحق ہو گیا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق رام گڑھ کے علاقے الور میں گزشتہ شب ایک بجے دو نوجوان اکبر اور اسلم ایک ایک گائے کو پیدل اپنے ہمراہ لے جا رہے تھے کہ ہندو ہجوم نے نوجوانوں کو گھیر کر گائے کی ملکیت سے متعلق پوچھا۔ ہجوم کا خیال تھا کہ دونوں نوجوان گائے کو ذبح کرنے یا فروخت کرنے کے لیے لے جا رہے ہیں۔ہجوم نے دونوں نوجوانوں کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں نوجوان اکبر موقع پر ہی دم توڑ گیا۔ جبکہ اسلم مشتعل ہجوم سے جان بچانے میں کامیاب ہو گیا۔ پولیس نے قتل اور اقدام قتل کی دفعات کے تحت نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کر کے تحقیقات کا آغاز کردیا ہے۔

دوسری جانب راجھستان کی وزیر اعلی وسندھرا راج نے واقعے کی مذمت کرتے ہوئے متعلقہ حکام کو ملوث ملزمان کے خلاف سخت کارروائی کرنے کی ہدایت کی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں مشتعل ہجوم کے ہاتھوں معصوم لوگوں کی ہلاکتوں میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے جس پر حال ہی میں بھارتی سپریم کورٹ نے مشتعل ہجوم کے ہاتھوں ہلاکتوں کے خلاف پارلیمنٹ کو سخت قانون سازی کرنے کا حکم دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

بھارت،آسام میں گائےچوری کا الزام، مزید 2مسلمان قتل

کانپور اور اتر پردیش میں جنونی ہندوؤں کے ہاتھوں 2 مسلمان شہید

 

Comments are closed.

Scroll To Top