تازہ ترین
بحریہ انکلیو کی جانب سے قبضہ کی گئی زمین کی تصدیق

بحریہ انکلیو کی جانب سے قبضہ کی گئی زمین کی تصدیق

اسلام آباد:(24 ستمبر 2018) سی ڈی اے اور اسلام آباد انتظامیہ کی مشترکہ ٹیموں نے بحریہ انکلیو اسلام آباد کی جانب سے قبضہ کی گئی زمین کی تصدیق کر دی۔ مشترکہ سروے ٹیموں نے رپورٹ وفاقی حکومت کو ارسال کردی۔

اسلام آباد انتظامیہ اور سی ڈی اے نے بحریہ انکلیو کی جانب سے قبضہ کی گئی زمین کی تصدیق کردی۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت آنے کے بعد وزیر داخلہ شہریارخان آفریدی نے بحریہ انکلیو جاکر زیر قبضہ زمین کی نشاندہی کروانے کا کام شروع کروایا تھا۔ سی ڈی اے اور اسلام آباد انتظامیہ کی مشترکہ سروے ٹیموں نے کئی دن کی کوششوں کے بعد سروے کا کام مکمل کرلیا۔

سی ڈی اے ذرائع کے مطابق بحریہ انکلیو نے سی ڈی اے کی 510 کنال زمین پر قبضہ کر رکھا ہے۔ اس جگہ پر چڑیا گھر، کمرشل پلازے اور کئی مکانات بھی تعمیر ہو چکے ہیں جبکہ سڑکیں اور دیگر ترقیاتی کام بھی جاری ہیں۔ زمین واگزار کروانے کیلئے رپورٹ وفاقی حکومت کو بھجوا دی ہے۔

حکومت کی جانب سے احکامات جاری ہونے کے بعد باقاعدہ آپریشن کیا جائے گا۔ سی ڈی اے نے زیر قبضہ زمین کی نشاندہی کرکے اطراف میں کانٹے دارتار لگا دی ہے۔

واضح رہے کہ ملک ریاض کی جانب سے بحریہ انکلیو کے آغاز کے ساتھ ہی سی ڈی اے کے کری ماڈل ویلج کے بلاک ڈی کی زمین اپنے منصوبے کا حصہ بنا لی تھی اور وہاں پر ترقیاتی کام مکمل کر کے بڑے بڑے پلاٹ فروخت بھی کردئیے ہیں۔ اس سے قبل سی ڈی اے نے جب بھی نشاندہی کی کوشش کی بحریہ انکلیو کی جانب سے ہر بار مزاحمت کی گئی۔

یہ بھی پڑھیے

این آر او عملدرآمد کیس: آصف زرداری کی نظرثانی درخواست سماعت کیلئے مقرر

این آر او عملدرآمد کیس: آصف زرداری کی نظرثانی درخواست سماعت کیلئے مقرر

Comments are closed.

Scroll To Top