تازہ ترین
بابری مسجد کو شہید کرنے والے شخص نے 90 سے زائد مساجد تعمیر کیں

بابری مسجد کو شہید کرنے والے شخص نے 90 سے زائد مساجد تعمیر کیں

نئی دہلی:(22 اکتوبر 2018) بھارتی انتہا پسند تنظیم کے اہم سیاسی کارکن جنہوں نے بھارتی ریاست اترپردیش کے شہر ایودھیا میں قائم بابری مسجد کو منہدم کرنے میں اہم کردار اداکیا اور بعد ازاں اسلام سے متاثر ہو کر مسلمان ہو گئے۔

محمدامیر جو اسلام قبول کرنے سے پہلے بلبیر سنگھ کے نام سے جانے جاتے تھے انہوں بابری مسجد کے واقعے کے بعد 90 سے زائد مساجد تعمیر کرنے میں اپنا کردار ادا کیا ہے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے(بشکریہ انڈین ٹوڈے

محمدامیر کی حال ہی میں ایک ویڈیو منظر عام پر آئی ہے جس میں انہوں نے بابری مسجد کو انہدام کے ساتھ اپنی دلی جذبات کے بدلنے سے لےکر اب تک کی کہانی کو بیان کیا ہے۔

اس کے علاوہ محمد امیر مذہبی مبلغ کے طور پر بھی خدمات انجام دیتے ہیں۔

محمدامیر جو اس سے قبل ہندو کار سیوک کے ایک گروہ کے سرگرم کارکن تھے نے اپنے سفر کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ وہ بھی ان افراد میں شامل تھے کنہوں نے بابرہ مسجد کی شہید کیا۔انڈین ٹوڈے کو انٹر ویو میں امیر نے انکشاف کیا کہ وہ وسط گنبد چڑھنے والا پہلا آدمی تھا۔

انہوں نے کہا کہ مجھے مسجد مسمار کرنے کے لیے استعمال کیا گیا جس کا اندازہ ہونے کے بعد میں نے اسلام قبول کرنے کا فیصلہ کیا۔

بعد ازاں محمد امیر نے مسلم خاتون سے شادی کر لی اور اب وہ اسلمی تعلیمات کو فروغ دینے کے لیے اسکول چلا رہے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

سری نگر: ضلع بارہ مولا میں بھارتی ریاستی دہشتگردی، حاملہ خاتون شہید

بھارتی شہر امرتسر میں ٹرین حادثہ، 50 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top