تازہ ترین
ایسا قانون ہونا چاہیے کہ کوئی ہارس ٹریڈنگ نہ کرسکے، مریم اورنگزیب

ایسا قانون ہونا چاہیے کہ کوئی ہارس ٹریڈنگ نہ کرسکے، مریم اورنگزیب

اسلام آباد: (14 مارچ 2018) وزیر مملکت اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ ایسا قانون ہو جس سے کوئی آئندہ ہارس ٹریڈنگ نہ کرسکے۔

وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا کہ آرٹیکل 218 اور 219 کے تحت الیکشن کمیشن صاف، شفاف اور بدعنوانی سے پاک انتخابات کرنے اختیار دیا گیا ہے۔ آرٹیکل 220 الیکشن کمیشن کو وسیع اختیارات دیتا ہے جس کے تحت الیکشن کمیشن حکومت، قانون نافذ کرنے والے اور انٹیلی جنس اداروں سے تعاون طلب کر سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ میں ورکرز ویلفئیر پارٹی اور عمران خان کے مقدمے میں الیکشن کمیشن کو اپنے اختیارات کو بھر پور طریقے سے استعمال کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ سینیٹ الیکشن بلا واسطہ انتخابی عمل ہے جس میں صوبائی اسمبلیوں میں سیاسی جماعتوں کے اراکین کی متناسب نمائندگی کے ذریعے سینیٹ الیکشن میں ووٹ کاسٹ کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ کسی جماعت کی اسمبلی میں نمائندگی نا ہو اور ان کا رکن سینیٹ الیکشن منتخب ہو جائے تو ہارس ٹریڈنگ کے زمرے میں آتا ہے۔مریم اورنگزیب نے مزید کہا کہ ہمارا مطالبہ ہے کہ الیکشن کمیشن ہارس ٹریڈنگ سے متعلق تحقیقات کرے۔ الیکشن کمیشن کو ذمہ داران سے جواب طلب کرنا چاہیے۔ جن لوگوں نے عوام کے ووٹ کا تقدس پامال کیا ہے انہیں سزا ملنی چاہیے۔

یہ بھی پڑھیے

انقلاب کے نعرے لگانے والوں کا بھیانک چہرہ سامنے آگیا، مریم اورنگزیب

اس وقت سوموٹو کہاں ہوتاہےجب سڑکیں بند کی جاتی ہیں،مریم اورنگزیب

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top