تازہ ترین
ایران نے چاہ بہار بندرگاہ کے ایک حصے کا آپریشنل کنٹرول بھارت کے سپرد کردیا

ایران نے چاہ بہار بندرگاہ کے ایک حصے کا آپریشنل کنٹرول بھارت کے سپرد کردیا

نئی دہلی:(18 فروری 2018) ایران نے چاہ بہار بندرگاہ کے ایک حصے کا آپریشنل کنٹرول بھارت کے سپرد کردیا۔ معاہدے پر ایرانی صدر کے دورہ بھارت کے دوران دستخط کئے گئے۔

ایران کے صدر حسن روحانی کے نئی دہلی میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے مذاکرات کے دوران چاہ بہار بندرگاہ کے ایک حصے کا آپریشنل کنٹرول بھارت کے سپرد کرنے کے معاہدے پر دستخط ہوئے۔ اس موقع پر ایرانی صدر نے کہا کہ دونوں ملکوں کے تعلقات مزید گہرے ہوئے ہیں اور دونوں علاقے سے دہشت گردی کا مسئلہ ختم کرنے کے لیے مل کر کام کرنے پر تیار ہیں۔

ذرائع کے مطابق ایران اور انڈیا نے نو معاہدوں کو حتمی شکل دی ہے جن میں سب سے اہم معاہدہ چاہ بہار بندرگاہ کے حوالے سے ہے جو بھارت کی مدد سے تعمیر کی جا رہی ہے۔اس معاہدے کے تحت بھارت کو اٹھارہ مہینوں کے لیے بندرگاہ کے پہلے فیز کا آپریشنل کنٹرول حاصل ہو جائے گا۔ چاہ بہار پاکستان کی گوادر بندرگاہ سے صرف نوے کلومیٹر دور ہے۔

چاہ بہار بندرگاہ میں بھارت کی خاص دلچسپی ہے کیونکہ اس راستے سے وہ پاکستان کو بائی پاس کرتے ہوئے براہ راست افغانستان پہنچ سکتا ہے۔ انڈیا افغانستان اور ایران نے گذشتہ برس اس سلسلے میں ایک سہ فریقی معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ بھارت نے افغانستان کو گندم سپلائی کرنے کے لیے اس راستے کا استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

ایرانی صدر کی سلامتی کونسل کے رکن کیلئے بھارت کی حمایت، چاہ بہارلیزپردیدی

امریکی سینیٹرز نے بھارت اور ایران کے درمیان چاہ بہار بندرگاہ منصوبے پر اعتراضات اٹھادیے

Comments are closed.

Scroll To Top