تازہ ترین
اپنا فیصلہ اللہ پر چھوڑتا ہوں، سابق وزیراعظم

اپنا فیصلہ اللہ پر چھوڑتا ہوں، سابق وزیراعظم

اسلام آباد:(19 دسمبر 2018) سابق وزیراعظم میاں نوازشریف نے اپنے خلاف دو نیب ریفرنسز کا فیصلہ محفوظ ہونے پر کمرہ عدالت میں روسٹرم پر آکر کہا ہے کہ ہر میدان میں دنیا ہماری کارکردگی دیکھ چکی ہے اور میری خدمت کا یہ صلہ ہے؟

اسلام آباد کی احتساب عدالت میں جج ارشد ملک نے جب العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز کے فیصلے محفوظ کیے تو سابق وزیاعظم روسٹرم پر آگئے،نوازشریف نے جج سے پوچھا کہ کیا یہ میری آخری پیشی ہے؟

سابق وزیراعظم نے جج ارشد ملک سے مکالمہ کیا کہ آپ جج ہیں، امید ہے انصاف ملے گا، مجھ پر ایک پائی کی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔

میاں نوازشریف نے کہا کہ میری آج اس کیس میں 78 ویں پیشی تھی، اس سے پہلے کیس میں 87 پیشیاں ہم بھگت چکے تھے،پارٹی قیادت اور کارکنوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں، کارکنوں نے کیس میں ہر پیشی پر یکجہتی کا اظہار کیا، دعاؤں پر دل کی گہرائی سے قوم کا بھی شکریہ ادا کرتاہوں، قوم کی دعائیں ہر قدم پر میرے ساتھ رہیں۔سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 2 مرتبہ وزیراعلیٰ پنجاب اور 3 بار وزیراعظم رہا، 35 سال عوام کی خدمت کی، پاکستان کے 22 کروڑ عوام کی خدمت کی، اس پر خوشی ہے۔

نوازشریف نے مزید کہا کہ جب سے سیاست میں قدم رکھا ہے کرپشن کے قریب سے بھی نہیں گزرا، کبھی اختیارات کا غلط استعمال نہیں کیا، ملک کی خدمت اور عوام کی خدمت سچے جذے کے ساتھ کی۔

سابق وزیراعظم نے کمرہ عدالت میں اپنے دورِ اقتدار کے کاموں کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان سے دہشت گردی اور مہنگائی کا خاتمہ کیا، میعشت کا پہیہ دوبارہ چلایا، پاکستان کی اسٹاک مارکیٹ کی دنیا تعریف کرتی تھی، پاکستان کو ایٹمی طاقت بنایا ، ہر میدان میں دنیا ہماری کارکردگی دیکھ چکی ہے۔میاں نوازشریف کا کہنا تھا کہ مفروضوں اور قیاس آرائیوں پر ساری کارروائی ہورہی ہے، اللہ دیکھ رہا ہے، کوئی آج تک کرپشن یا کک بیک کی انگلی نہیں اٹھاسکتا، تین مرتبہ وزیراعظم رہنے والے کے ساتھ جو سلوک ہورہا ہے اس پر دکھ ہے، میری خدمت کا یہ صلہ ہے؟

جو ہم پر گزری سو گزری مگر شب ہجراں

ہمارے اشک تیری عاقبت سنوار چلے

بعد ازاں احتساب عدالت میں پیشی کے بعد میڈیا سے گفتگو میں نواز شریف کا کہنا تھا کہ کرپشن میرے قریب سے نہیں گزری، کبھی کمیشن نہیں لی، کبھی اختیارات کا غلط استعمال نہیں کیا، ہمیشہ قوم کی خدمت کی، اپنا فیصلہ عدالت پر چھوڑ دیا ہے۔

سابق وزیراعظم نواز شریف کا کہنا تھا کہ 24 دسمبر کو فیصلہ سنایا جائے گا، موجودہ کیسز میں 78 ویں بار عدالت پیش ہوا، جج محمد بشیر کی عدالت میں 87 بار پیش ہوا، نیب ریفرنسز میں 165 بار احتساب عدالت میں پیش ہوا۔ انہوں نے کہا پاکستان سے دہشتگردی اور مہنگائی کا خاتمہ کیا، پاکستان کے عوام کی خدمت کی اور اس پر خوشی ہے، کیس کیا ہے، کچھ سمجھ نہیں آرہا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

فلیگ شپ اور العزیزیہ ریفرنسز کا فیصلہ محفوظ

Comments are closed.

Scroll To Top