تازہ ترین
آئی جی پنجاب نے قصور واقعے کی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی

آئی جی پنجاب نے قصور واقعے کی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی

اسلام آباد: (11 جنوری 2018) آئی جی پنجاب نے قصور واقعے کی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی۔ رپورٹ کے مطابق ملزم کو پکڑنے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔ تحقیقات کی نگرانی ایڈیشنل انسپکٹر جنرل آف پولیس پنجاب کررہے ہیں۔

آئی جی پنجاب کی جانب سے سپریم کورٹ میں جمع کرائی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ملزمان تک پہنچنے کیلئے موبائل ڈیٹا سے مدد بھی لی جارہی ہے۔ سی سی ٹی وی کیمرے کی ویڈیو سے ملزم کی شناخت نہیں ہوسکی۔ ویڈیو کوالٹی بہتر بنانے کیلئے پنجاب فرانزک لیب کو کہا ہے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

رپورٹ میں بتایا گیا کہ ملزم کو پکڑنے کیلئے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں۔ تحقیقات کی نگرانی ایڈیشنل انسپکٹر جنرل آف پولیس پنجاب کررہے ہیں۔ ایڈیشنل آئی جی پولیس کی سربراہی میں ٹیم تشکیل دے دی گئی ہے۔ 227 مشتبہ افراد سے تفتیش کی جارہی ہے، جبکہ مشتبہ شخص کا خاکہ بھی تیار کیا گیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق عینی شاہد کی مدد سے گھر گھر تلاشی جاری ہے۔ 67 مشتبہ افراد کے ڈی این اے ٹیسٹ لیبارٹری بھجوا دیئے گئے ہیں۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ ملزمان تک پہنچنے کیلئے موبائل ڈیٹا سے مدد بھی لی جارہی ہے۔ علاقے کا جیو فینسنگ ڈیٹا حاصل کرلیا گیا ہے۔ حکومت پنجاب نے مجرم کی اطلاع دینے پر ایک کروڑ روپے انعام رکھا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

زینب قتل: ملزم کی نشاندہی کرنے والے کیلئے ایک کروڑ روپے انعام کا اعلان

زینب قتل کے دلخراش واقعے نے قوم کو متحد کردیا، عمران خان

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top